72 سالہ بوڑھے ارب پتی کو نوجوان بیوی کی تلاش، ایک سال گزرنے کے باوجود کوئی لڑکی نہ ملی تو اب شادی کے ساتھ ہی دلہن کو ایسی چیز دینے کی پیشکش کر دی جو کوئی بھی شوہر نہیں دیتا

72 سالہ بوڑھے ارب پتی کو نوجوان بیوی کی تلاش، ایک سال گزرنے کے باوجود کوئی ...
72 سالہ بوڑھے ارب پتی کو نوجوان بیوی کی تلاش، ایک سال گزرنے کے باوجود کوئی لڑکی نہ ملی تو اب شادی کے ساتھ ہی دلہن کو ایسی چیز دینے کی پیشکش کر دی جو کوئی بھی شوہر نہیں دیتا

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) برطانیہ میں ایک 73سالہ بوڑھے ارب پتی کو نوجوان بیوی کی تلاش ہے۔ ایک سال قبل اس نے شادی خواہش مند لڑکیوں کو کئی لالچ دیئے لیکن اب تک اسے دلہن نہیں مل سکی، جس پر اس نے دلہن کو ایک ایسی چیز کی پیشکش کر دی ہے جو کوئی شوہر اپنی بیوی کو نہیں دیتا۔ میل آن لائن کے مطابق سربنیامین سلیڈ نامی اس شخص نے اب کہا ہے کہ جو لڑکی اس سے شادی کرے گی اسے گزشتہ اعلان کردہ مراعات کے ساتھ ساتھ اپنا کریڈٹ کارڈ بھی اس کے قبضے میں دے دوں گا جسے وہ جیسے چاہے استعمال کر سکے گی۔

سر بنیامین، جو برطانیہ کے بادشاہ چارلس دوئم کی اولاد میں سے ہے، نے ایک سال قبل ٹی وی چینل پر اپیل کی تھی کہ ’مجھے ایک لڑکی چاہیے جس کے ساتھ مل کر میں اپنی جائیداد کا وارث پیدا کر سکوں۔‘سر بنیامین نے چند سال قبل ہی اپنی 50سالہ بیوی بریجیٹ کانوے کو طلاق دی ہے۔ اور اب اس نے اس عمر میں دوبارہ شادی کا اعلان کر دیا ہے جس کے لیے اسے لڑکی کی تلاش ہے۔

رپورٹ کے مطابق سر بنیامین کا کہنا تھا کہ ’’جب وراثت کی بات ہوتی ہے تو بیٹیاں کوئی حیثیت نہیں رکھتیں۔ بیٹیاں ہونا اچھی بات ہے لیکن جائیداد کے وارث صرف بیٹے ہی ہو سکتے ہیں اور اب میں اس خاتون سے شادی کرنا چاہتا ہوں کہ میرے لیے بیٹا پیدا کر سکے۔‘‘ سر بنیامین اعلیٰ برطانوی اعزاز کا مالک ہے لیکن اپنی شرمناک حرکتوں کی وجہ سے برطانیہ بھر میں اس سے نفرت کا اظہار کیا جاتا ہے کیونکہ وہ کھلے عام بھی فحش گفتگو سے بازنہیں آتا۔ اس نے اعلان کیا ہے کہ ’’میں شادی کی خواہش مند لڑکیوں کے انٹرویوز کروں گا اور منتخب ہونے والی لڑکی کو ایک گھر، 50ہزار پاؤنڈ تنخواہ، گاڑی اور کھانے کا خرچ دوں گا اور اس کی چھٹیوں کا خرچہ بھی اٹھاؤں گا، لیکن شرط یہ ہے کہ اسے دو بیٹے پیدا کرنے ہوں گے۔‘‘

مزید : ڈیلی بائیٹس /برطانیہ