سیاسی بد انتظامیوں کے باعث کراچی کے حالات بد ترین ہوئے: وزیراعظم 

    سیاسی بد انتظامیوں کے باعث کراچی کے حالات بد ترین ہوئے: وزیراعظم 

  

  اسلام آباد (سٹاف رپورٹر،نیوز ایجنسیاں) وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے ماحولیاتی تغیراتی تبدیلیوں کا مقابلہ کرنے کیلئے تمام متعلقہ وفاقی و صوبائی اداروں میں بہتر کوآرڈینیشن کی ضرورت ہے۔ وزیر اعظم عمران خان کی زیر صدارت نیشنل کوآرڈینیشن کمیٹی برائے فلڈز کا اجلاس ہوا جس میں وفاقی وزراء شبلی فراز، مراد سعید، فیصل واؤڈا، چیئرمین این ڈی ایم اے لیفٹننیٹ جنرل محمد افضل، چیئرمین این ایچ اے، چیئرمین فلڈ کمیشن، ڈی جی میٹرولوجیکل ڈیپارٹمنٹ و دیگر سینئر افسران شریک، صوبائی چیف سیکرٹریزنے بذریعہ ویڈیو لنک اجلاس میں شرکت کی،چیئرمین این ڈی ایم نے وزیر اعظم کو ملک میں مون سون، مختلف حصوں میں حالیہ بارشوں کی صورتحال، جانی و مالی نقصانات اور اداری کی ریلیف سرگرمیوں پربریفنگ دی۔ وزیراعظم کو بتایاگیا کہ حالیہ مون سون کے نتیجے میں سال ملک میں ماضی کی نسبت زیادہ بارشیں ہوئی ہیں، اسوقت تمام دریاؤں میں درمیانے درجے کا بہاؤ ہے اورحالیہ بارشوں کے نتیجے میں تمام ڈیم پانی سے مکمل طور پر بھر چکے ہیں پانی کی دستیابی کی صورتحال تسلی بخش رہے گی۔ چیف سیکرٹریز نے اپنے اپنے صوبوں میں جانی و مالی نقصا نا ت، ریلیف سرگرمیوں سے آگاہ کیا۔ پاک آرمی کی جانب سے بھی ریلیف سرگرمیوں کے بارے میں بھی اجلاس کو آگاہ کیا گیا۔ وزیراعظم نے اس موقع چیئرمین این ڈی ایم اے کو ہدایت کی کہ صوبائی حکومتوں کیساتھ مل کر نقصانات کا جائزہ لیا جائے تاکہ ریلیف سرگرمیوں کو مزید بہتر، نقصانات کا ازالہ کرنے کیلئے وفا ق مشترکہ حکمت عملی تشکیل دے سکے۔قبل ازیں مشیر پارلیمانی امور ڈاکٹر بابر اعوان نے   وزیراعظم عمران خان سے ملاقات کی جس میں کراچی ٹرانسفارمیشن پیکیج، پارلیمانی معا ملا ت، ایف اے ٹی ایف سے متعلقہ قانون سازی پرتبادلہ خیال کیا گیا،وزیراعظم کا کہناتھا سیاسی بد انتظامیوں کے باعث کراچی کے حالات بد ترین ہوئے۔ ٹرانسفارمیشن پیکیج کے تحت منصوبوں پر جلد عملدرآمد ضروری ہے، شہر قائد کی ترقی وفاقی حکومت کے ایجنڈے میں شامل ہے، وفاق کراچی کے مسائل کے حل کیلئے مالی وسائل فراہم کرے گا۔ وزیراعظم نے قانون سازی کا عمل جلد مکمل کرنے کے عزم کاا ظہاربھی کیا۔بعدازاں وزیر اعظم عمران خان سے آسٹریلوی پاور کمپنی کے چیئرمین اینڈریو فوریسٹ نے ملاقات کی، ملاقات میں مشیر تجارت رزاق داؤد اور چیئرمین سرمایہ کاری بورڈ عاطف بخاری بھی موجود تھے۔ وزیر اعظم نے آسٹریلوی کمپنی کی جانب سے پاکستان میں سرمایہ کاری کاخیر مقدم کیا اور کہا  آسٹریلوی کمپنی کو کاروبار کے حوالے سے ہر ممکن سہولت فراہم کریں گے،انہوں نے آسٹریلوی وفد کو معیشت کی بحالی سے متعلق اقدامات سے آگاہ کیا۔ ملاقات میں چیئرمین آسٹریلوی پاور کمپنی نے انسداد کورنا وباء کیلئے اقدامات کی تعریف کی اور کہا کمپنی کا پاکستان میں متبادل توانائی اور گرین انڈسٹری کے شعبوں میں سرمایہ کاری کا منصوبہ ہے۔بعدازاں وزیر اعظم عمران خان نے ترلائی اسلام آباد میں نئی اپ گریڈ ڈماڈل پناہ گا ہ کا دورہ کیا،اس موقع پر انکاکہناتھا وفاقی دالحکومت کی تمام پانچوں پناہ گاہوں میں ترجیحی خدمت کی فراہمی کے معیارات کو اپنایا جائیگا اور بعد ازاں ملک بھر میں اس کی توسیع کی جائیگی۔اس موقع پر وزیرا عظم کی معاون خصوصی ڈاکٹر ثانیہ نشتر نے وزیر اعظم کو پناہ گاہ میں ری ماڈل انتظامی امور اور اصلاحی خدمات جبکہ ایم ڈی بیت المال، عون بپی نے پناہ گاہ کے نظام و انصرام میں کی جانیوالی تبدیلیوں سے متعلق آگاہ کیا۔وزیر اعظم نے پناہ گاہ میں موجود مزدوروں سے بات چیت کی، دستیاب سہولیات اور درپیش مسائل کے بارے میں دریافت کیا۔دریں اثناء وزیراعظم عمران خان نے  تعلیمی ادارے کھولنے کے معاملے پرکورونا سے متعلق قومی رابطہ کمیٹی کا اہم آج اجلاس طلب کر لیا،اجلاس میں صوبائی وزرائے اعلی،وفاقی وزراء، معاونین، سول و عسکری اداروں کے حکام شریک ہوں گے، کورونا کی موجودہ صورتحال، اعدادوشمار، تعلیمی ادارے کھولنے سے متعلق صوبائی حکومتوں کی تجاویز کا جائزہ لیا جائیگا، وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود تجاویز اور ایس او پیز پر بریفنگ دیں گے، قومی رابطہ کمیٹی تجاویز کی روشنی میں حتمی فیصلہ کرے گی، قومی رابطہ کمیٹی کے گزشتہ اجلاس کے فیصلوں پر عمل درآمد کا جائزہ لیا جائیگا۔

وزیراعظم

مزید :

صفحہ اول -