ٹریفک پولیس کی حادثات سے بچاؤکیلئے آگاہی مہم کا آغاز

ٹریفک پولیس کی حادثات سے بچاؤکیلئے آگاہی مہم کا آغاز

  

لا ہو ر (کر ائم رپو رٹر) موثر ٹریفک پلان اور حادثات سے پاک شاہراہوں کیلئے دو ہفتوں کیلئے آگاہی مہم کا افتتاح کر دیا، حماد عابد کا مال روڈ سے ٹریفک آگاہی مہم کا افتتاح کیا، انہوں نے سی ٹی او نے کورونا کرائسسز میں ٹریفک پولیس کے کردار اور نئے عوامی سہولتوں کے منصوبوں پر میڈیا کو بریفنگ دی،ان کا کہنا تھا کہ حادثات کی روک تھام کیلئے آگاہی شروع کی جارہی ہے، شہر کے پانچ ماڈل روڈز کا انتخاب کیا گیا ہے، جس کیلئے آگاہی شروع کر دی ہے، دو ہفتوں بعد زیرو ٹولرنس کارروائی کی جائے گی، پانچ ماڈل روڈز پر لین لائن، ون وے ٹریفک کی خلاف ورزی، کم عمر ڈرائیورز اور ہیلمٹ کی آگاہی مہم شروع کی جارہی ہے، ان کا کہنا تھا کہ شہری سہولت کیلئے موٹرسائیکل تو خرید سکتے ہیں، اپنی اور اپنی فیملی کی حفاظت کیلئے ہیلمٹ کیوں نہیں؟ ہیلمٹ چالان کے ڈر سے نہیں۔ اپنی حفاظت کیلئے پہنیں، سید حماد عابد کا۔مزید کہنا تھا کہ ابتدائی طور پر سنگل سیٹر پر سختی ہوگی، بغیر ہیلمٹ ڈبل سیٹر کیلیے بھی کارروائی کی جائے گی، ہیلمٹ کی پابندی کیلئے تمام سرکاری و نیم سرکاری کو خط لکھا جائے گا۔

، ہیلمٹ کے بغیر کسی کی حاضری کو تصور نہ کیاجائے، کم عمر ڈرائیورز کی حوصلہ سکول، کالجز کے انتظامیہ کو بھی ایپل کی جائے گی، آگاہی مہم کے بعد کم عمر ڈرائیور کی موٹرسائیکل، گاڑی، رکشے والدین کی طرف سے شورٹی بانڈز لینے کے بعد واپس کی جائے گی، کمشنر لاہور کی ہدایت پر ٹریفک کی بہتری کیلئے سی ٹی او لاہور کی سربراہی میں اعلیٰ سطحی کمیٹی بھی تشکیل دی گئیں ہیں، ان کا کہنا تھا کہ شہریوں کی سہولت اور آسانی کے سبزہ زار میں بحریہ ٹاون، گریٹر اقبال پارک میں تین نئے ٹیسٹنگ سنٹر بنانے کا اعلان بھی کیا، سید حماد عابد کا مزید کہنا تھا کہ حادثات کی تفتیش خصوصاََ مہلک کیلئے ٹریفک پولیس میں انوسٹی گیشن سنٹر بھی قائم کیا جارہا ہے، سٹی ٹریفک پولیس کا انوسٹی گیشن ونگ ضلعی پولیس کے انوسٹی گیشن ونگ کو دوران تفتیش مدد فراہم کرے گا، سٹی ٹریفک پولیس نے کورونا کرائسسز میں بھی شہریوں کو سروسز فراہم کرتی رہیں، سی ٹی او لاہور سید حماد عابد نے میڈیا نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ سوشل ڈیسٹنس پالیسی کے پیش نظر الیکٹرانک پیمنٹ سسٹم متعارف کروایا گیا، تین ماہ میں 06 لاکھ 44 ہزار 185 شہریوں نے چالان فیس الیکٹرانک پیمنٹ سسٹم کے ذریعے جمع کروائی، شہریوں کو اب لائنوں میں لگنے کی ضرورت نہیں، ون لنک، اے ٹی ایم، جاز کیش، اور ایزی پیسہ اور ان لائن بینکنگ کے ذریعے رقم جمع کروا سکتے ہیں، شہری بغیر کسی اضافی چارجز کے الیکٹرانک پے منٹ سسٹم سے چالان جمع کروا سکتے ہیں، کورونا کرائسز میں آن لائن ٹائم شیڈولنگ سسٹم بھی متعارف کروایا گیا، تین ماہ کے دوران 72 ہزار 635 شہریوں کو سروسز فراہم کیں گئیں، پہلی بار خواتین اور بزرگ شہریوں کیلئے قطار سسٹم کو ختم کیا گیا، موبائل لرنر لائسنسنگ وین کو مزید سہولیات کے ساتھ دوبارہ لانچ کر دیا گیا، بحریہ ٹاؤن اور اقبال ٹاؤن میں اسٹیٹ آف دی آرٹ فسلیٹیشن سنٹرز کا افتتاح کیا گیا، سی ٹی او لاہور کا کہنا تھا کہ قانون شکن عناصر کیخلاف مہم شروع، ای چالان نادہندہ گاڑیوں کو پکڑا جا رہا ہے، سیف سٹی کے اشتراک سے ازسرنو ای چالان نادہندہ گاڑیوں کی پکڑ دھکڑ کیلئے ٹیمیں تشکیل دی گئی ہیں، 10 ہزار سے زائد ای چالان نادہندہ گاڑیوں کے کاغذات کو قبضہ میں لیا گیا، شہریوں میں قانون کی پاسداری کیلئے نمبر پلیٹس کیخلاف کارروائی شروع کی گئی، نمبر پلیٹس مہم میں 03 لاکھ 98 ہزار 341 وہیکلز کیخلاف کارروائی کی گئی، غیر نمونہ پلیٹس، گرین نمبر پلیٹس، نیلی بتی اور کالے شیشوں والی گاڑیوں کیخلاف کارروائیاں کیں گئیں، پہلی بار ٹریفک وارڈنز کی کارکردگی کو جانچنے کیلئے پوائنٹس سسٹم متعارف کروایا گیا، اچھے کاموں پر انعام اور غفلت پر سخت محاسبہ کیا جائے گا، کورونا وباء کی پاسداری کو یقینی بنانے پر 01 لاکھ 70 ہزار 198  وائیلٹرز کے چالان کئے گئے، کورونا وباء میں مجموعی طور پر پانچ لاکھ سے زائد شہریوں کو ایجوکیٹ کیا گیا، سی ٹی او لاہور سید حماد عابد کا کہنا تھا کہ شہریوں کو ماڈل روڈز پر ٹریفک میں واضح تبدیلی نظر آئے گی، شہریوں کیلئے پولیس سروسز کو یقینی بنایا جارہا ہے۔

مزید :

علاقائی -