ملتان جعلی زرعی ادویا ت، کھادوں کا مرکز، فوری آپریشن ضروری زاہد اخترزمان 

ملتان جعلی زرعی ادویا ت، کھادوں کا مرکز، فوری آپریشن ضروری زاہد اخترزمان 

  

ملتان (سپیشل رپورٹر‘ نیوز رپورٹر‘ سٹی رپورٹر) ایڈیشنل چیف سیکرٹری جنوبی پنجاب زاہد اختر زمان نے کہا ہے کہ جنوبی پنجاب کے عوام کو جدید سہولیات زندگی کی فراہمی پنجاب حکومت کا ترجیحی ایجنڈا ہے جنوبی پنجاب سیکرٹریٹ کاقیام اس خطے کی ترقی میں تیزی کا باعث ہو گا یہ بات انہوں نے ایم ڈی سے آفس ملتان میں ایک اعلی سطحی ترقیاتی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہی اجلاس میں سیکرٹری ہاو سنگ اینڈ فزیکل پلاننگ لیاقت چٹھہ، محکمہ ہاوسنگ،پبلک ہیلتھ انجینئرنگ،ملتان ڈویلپمنٹ اتھارٹی،ڈیرہ غازی خان ڈویلپمنٹ اتھارٹی،بہاوپور ڈویلپمنٹ اتھارٹی، کوہ سلیمان ڈویلپمنٹ اتھارٹی،ملتان،بہاولپور،ڈی جی خان پی ایچ اے کے افسران نے شرکت کی۔ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے ایڈیشنل چیف سیکر ٹری جنوبی پنجاب زاہد اختر زمان نے افسران کو ہدایت کی کہ وہ ترقیاتی منصوبوں کی مقررہ مدت میں تکمیل کو یقینی بنائیں جو منصوبے منظوری کے مراحل میں ہیں انہیں بلاتاخیر تمام جزیئات کو ملحوظ رکھتے ہوئے منظور کرایا جائے زاہد اختر زمان۔نے کہا کہ ترقیاتی منصوبوں میں تاخیری حربے ہرگز برداشت نہیں کئے جائیں گے سرکاری فنڈز کو کسی صورت ضائع نہ ہونے دیا جائے۔ایڈیشنل چیف سیکرٹری جنوبی پنجاب زاہد اختر زمان نے بریفنگ کے دوران اتھارٹیز کی طرف سے سٹاف اور وسائل کی کمی کی نشاندہی پر بتایا کہ نئے لوکل گورنمنٹ ایکٹ میں اتھارٹیز کا کردار محدود ہو جائے گا۔ڈویلپمنٹ اتھارٹیز کے افسران نئے سسٹم کے لیے اپنے اداروں کو منظم کریں ڈویلپمنٹ اتھارٹیز کو انجینئرنگ فرم کے طور پر تیار کیا جائے زاہد اختر زمان نے کہا کہ ملتان میں ابتدائی طور پر پانچ سیکرٹری کام شروع کریں گے سیکرٹری ہاو ¿سنگ 15 روز میں اپنا دفتر فنکشنل کریں آئندہ چند روز میں جنوبی پنجاب کے سیکرٹریز کو فنڈز کا اجرائکر دیا جائے گا انہوں نے کہا کہ سپانسر شپ کے تحت تینوں ڈویژنل ہیڈ کوارٹرز میں چوراہوں کو خوبصورت بنایا جائے انہوں نے پی ایچ اے بہاولپور کی کارکردگی کو مایوس کن قرار دیا زاہد اختر زمان نے ہدایت کی کہ ملتان شہر میں سیوریج کے مسائل کے حل کا 40 ارب روپے مالیت کا منصوبہ ماسٹر پلان کے مطابق مکمل کرائیں ای سسٹم پر خط و کتابت کو اپنایا جائے دفاتر کے لیے فوری کرایہ کی عمارات حاصل کی جائیں۔ جبکہ  ایڈیشنل چیف سیکرٹری جنوبی پنجاب زاہد اخترزمان نے کہا ہے کہ جنوبی پنجاب میں ایک نئے سٹرکچر کے تحت کام کا آغاز کردیا گیا ہے۔ محکمہ زراعت ساؤتھ پنجاب کا تمام سٹاف سیکرٹری زراعت ساؤتھ پنجاب کی ڈسپوزل پر ہوگا اور ان کے لوکل ایشوز ساؤتھ پنجاب سیکرٹریٹ میں حل کیے جائیں گے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے مینگو ریسرچ انسٹیٹیوٹ میں منعقدہ شعبہ زراعت جنوبی پنجاب کے ڈویژنل ہیڈز کے اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر سیکرٹری زراعت جنوبی پنجاب ثاقب علی عطیل بھی موجود تھے۔ انہوں نے مزید کہا کہ محکمہ زراعت ساؤتھ پنجاب میں گریڈ 20 کی نئی پوسٹیں پیدا کی گئی ہیں۔ زراعت ایک بہت بڑا محکمہ ہے لہٰذا جنوبی پنجاب میں زرعی شعبہ کو جدید خطوط پر استوار کرنے کیلئے محکمانہ کارکردگی میں اضافہ ناگزیر ہے۔ تمام افسران اپنی ذمہ داریاں بہترین انداز میں سرانجام دیں۔ انہوں نے کہا کہ آئندہ شعبہ زراعت (توسیع) ہر یونین کونسل میں عام کاشتکار کا ایک زرعی فارم اپنی سرپرستی میں لے جس پر جدید محکمانہ سفارشات کے مطابق عملدرآمد کیا جائے اور بعد ازاں اس فارم کا دیگر فارمز سے موازنہ کیا جائے گا۔ محکمہ زراعت کے تمام فارمز کو جدید فارمز میں تبدیل کیا جائے گا۔انہوں نے کہا کہ پورے ملک کی معیشت کا انحصار کپاس پر ہے۔ بدقسمتی سے کپاس گزشتہ کئی سالوں سے بدحالی کا شکار ہے۔ کپاس پر جاری تحقیقی سرگرمیوں کا از سر نو جائزہ لینے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ شعبہ زرعی انجینئرنگ کی کارکردگی وسائل اور مشینری کے حساب سے مطابقت نہیں رکھتی۔ واٹر مینجمنٹ ونگ کھالہ جات کی اصلاح میں اچھا کام کررہا ہے۔ پانی کے ضیاع کو روکنے کیلئے نئے باغات ترجیحاً ہائی ایفیشینسی اریگیشن سسٹم کے تحت لگائے جائیں۔ لوکسٹ کنٹرول کیلئے محکمہ زراعت نے اچھا کام کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ملتان جعلی زرعی ادویات اور کھادوں کا مرکزہے اس کے مکمل خاتمہ کیلئے متعلقہ شعبہ کو ٹاسک سونپا جائے۔ ایڈیشنل چیف سیکرٹری ساؤتھ پنجاب نے کہا کہ نئے سیٹ اپ میں آئی ٹی اور پیپر لیس کلچر کو متعارف کرایا گیا ہے۔ ای فائل اکاؤنٹ بن چکے ہیں۔ آئندہ دفتری خط و کتابت ای فائلز کے ذریعے ہوگی۔ دفاتر میں حاضری اور وقت کی پابندی پر سختی سے عمل کیا جائے گا۔ دیر سے آنے اور غیر حاضری پر کسی قسم کا سمجھوتہ نہیں کیا جائے گا۔ انہوں نے مزید کہا کہ اگر کوئی سٹاف ممبر اپر پنجاب میں جانا چاہتا ہے تو اپنی ریکوزیشن متعلقہ سیکرٹری کے ذریعے سیکرٹری ساؤتھ پنجاب کو بھیجے اور اسی طرح جو افسران و عملہ ساؤتھ میں آنا چاہتا ہے وہ اپنی ریکوزیشن بذریعہ سیکرٹری زراعت ساؤتھ پنجاب بھیجے گا۔اس موقع پر سیکرٹری زراعت جنوبی پنجاب ثاقب علی عطیل نے کہا کہ ساؤتھ پنجاب میں تمام افسران کو ٹریننگ کی ضرورت ہے لہٰذا ان کی کیپسٹی بلڈنگ کیلئے ٹریننگ کا بندوبست کیا جارہا ہے۔ ایڈیشنل چیف سیکرٹری ساوتھ پنجاب زاہد اختر زمان اور سیکرٹری ہیلتھ جنوبی پنجاب اجمل بھٹی نے گزشتہ روز نشتر میڈیکل یونیورسٹی و ہسپتال کا دورہ کیا جہاں انہوں نے  انتظامی افسران سے اہم میٹنگ کی، اس دوران وائس چانسلر نشتر میڈیکل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر احمد اعجاز مسعود،ایم ایس نشتر ہسپتال ڈاکٹر شاہد بخاری، سی ای او ہیلتھ ملتان ڈاکٹر ارشد ملک سمیت جنوبی پنجاب کی ڈسٹرکٹ ہیلتھ اتھارٹی کے سی ای اوز اور دیگر ٹیچنگ ہسپتالوں کے سربراہان موجود تھے،اس موقع پر ایڈیشنل چیف سیکرٹری ساوتھ پنجاب اور  سیکرٹری صحت جنوبی پنجاب نے نشتر ہسپتال سمیت دیگر اضلاع میں جاری صحت سے متعلق جاری مختلف  ترقیاتی منصوبوں سے متعلق بریفینگ لینے کے علاوہ بجٹ کے مسائل سے متعلق تفصیلی گفتگو کی اور بتایا کہ موجودہ حکومت کے ویڑن کے مطابق اب جنوبی پنجاب کے تمام مسائل عوام کی دہلیز پر حل کئے جائیں گے،اس موقع پر وائس چانسلر نشتر میڈیکل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر احمد اعجاز مسعود نے انہیں کینسر ٹریٹمنٹ سنٹر،پانچ منزلہ فارمیسی سٹور،اور دیگر منصوبوں بارے بریفننگ دی جبکہ یونیورسٹی کے دیگر مسائل سے متعلق آگاہ کیا۔ایڈیشنل چیف سیکرٹری ساوتھ پنجاب نے میٹنگ کے شرکاء کو بتایا کہ ساوتھ پنجاب کے سیکرٹری صحت پرائمری اینڈ سیکنڈری اور سپیشلائزڈ کے دونوں محکموں کے ایک ہیں۔

زاہد اختر زمان

مزید :

صفحہ اول -