جرائم کی تحقیقات میں تیزی اور شفافیت،خیبرپختونخوا حکومت نےایسا کام کرنے کا فیصلہ کر لیا جو شہباز شریف کئی سال پہلے کر چکے ہیں

جرائم کی تحقیقات میں تیزی اور شفافیت،خیبرپختونخوا حکومت نےایسا کام کرنے کا ...
جرائم کی تحقیقات میں تیزی اور شفافیت،خیبرپختونخوا حکومت نےایسا کام کرنے کا فیصلہ کر لیا جو شہباز شریف کئی سال پہلے کر چکے ہیں

  

پشاور(ڈیلی پاکستان آن لائن) خیبرپختونخوا حکومت نے جرائم کی تحقیقات میں تیزی کے لیے فرانزک ایجنسی قائم کرنے کا فیصلہ کرلیا، فرانزک سائنس ایجنسی بل صوبائی اسمبلی میں منظور ہوگیا۔

نجی ٹی وی کے مطابق خیبر پختونخوا حکومت نے فرانزک سائنس ایجنسی بل صوبائی اسمبلی سے منظور کرالیا، فرانزک ایجنسی کے قیام سے صوبے میں جرائم کی تحقیقات میں تیزی آئے گی اور ملزمان تک پہنچنے میں معاونت ملے گی۔بل کے متن میں کہا گیا ہے کہ جرائم کی تفتیش میں تحقیقاتی ادارے زیرسماعت کیسز میں معاونت کریں گے، ایجنسی کے تحت جرائم میں استعمال دستاویز، مواد اور آلات کی جانچ پڑتال ہوگی۔متن کے مطابق تحقیقات میں غلطی یاغفلت پر ملازمین کو 7سال کی سزا اور 10لاکھ روپے جرمانے کی تجویز شامل ہے، محکمہ داخلہ ایجنسی کی سالانہ رپورٹ اسمبلی میں پیش کرے گی۔

واضح رہے کہ ملک کی واحد فرانزک سائنس ایجنسی 2009  میں اس وقت کے وزیر اعلیٰ پنجاب میاں شہباز شریف نے قائم کی تھی ۔ٹھوکر نیاز بیگ لاہور میں قائم  ملک کی پہلی ماڈل فرانزک سائنس ایجنسی نےتفتیش و تحقیق کی دنیا میں ایک انقلاب برپا کردیا ہے اور ملک بھر میں اہم کیسز کے ملزمان کی تلاش کے لئے تحقیقاتی ادارے پنجاب فرازنک سائنس ایجنسی سے رجوع کرتے ہیں۔

مزید :

علاقائی -خیبرپختون خواہ -پشاور -