حکمران این آر او اور کرپشن کا چورن کب تک فروخت کرینگے: سعد رفیق 

حکمران این آر او اور کرپشن کا چورن کب تک فروخت کرینگے: سعد رفیق 

  

لاہور(این این آئی) پاکستان مسلم لیگ (ن) کے مرکزی رہنما خواجہ سعد رفیق نے کہاہے کہ ملک میں اس وقت آئین اور جمہوریت کی حکومت نہیں، وزیر اعلیٰ پنجاب اور رپولیس افسران سے کہنا چاہتے ہیں وہ غیر قانونی کاموں میں ملوث نہ ہوں، اگر ہمارے ساتھ چھیڑ خانی کی گئی تو لاہور فلیش پوائنٹ ہوگا، اگر حکومت ہمارے کنٹونمنٹ بورڈ کے انتخابات میں ہمارے لوگوں کی پکڑ دھکڑ سے باز نہ آئی تو سڑکوں پر بھرپور احتجاج کریں گے او ریہ ہماری پارٹی پالیسی ہے،حکومت نمائشی ترقیاتی کام کروا کر ووٹ لینا چاہتی ہے لیکن انہیں ناکامی کا منہ دیکھنا پڑے گا،حکومت واقعی کام کرنا چاہتی ہے تو 12ستمبر کے بعد بھی کام جاری رکھے،این آر او اورکرپشن کا چورن کب تک فروخت کریں گے اب تو لوگوں کے کان پک گئے ہیں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے دیگر رہنماؤں کے ہمراہ اپنے مرکزی دفتر قاضی پلازہ میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔خواجہ سعد رفیق نے کہا کہ لوگ بیتابی سے 12ستمبر کا انتظار کررہے ہیں کیونکہ لاقانونیت اورغربت سے تنگ لوگ کنٹونمنٹ بورڈز کے بلدیاتی انتخابات میں ووٹ سے پی ٹی آئی کو مسترد کریں گے،حکومت نے کنٹونمنٹ میں پہلے کوئی کام نہیں کیا، اب الیکشن نزدیک آتے ہی سرکاری اداروں کو متحرک کرکے ترقیاتی کام شروع کر دئیے ہیں،الیکشن کمیشن نے حکومتی ترقیاتی کام کا نوٹس لیا ہے اوراسے روک دیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ عمران خان کا کام صرف الزام لگانا ہے عوامی کام نہیں کرتے۔ انہوں نے کہا کہ پی ایم ڈی اے اتھارٹی میڈیا کو کنٹرول کرنے کیلئے بنایاجارہاہے، پیشہ ور صحافیوں کی زبان کو بند کیاجارہاہے،عوام آزادی صحافت کے ساتھ کھڑے ہیں، سعد رفیق لاہور،پاکستانیوں کو چیچک زدہ جمہوریت قبول نہیں۔ انہوں نے کہا کہ ووٹ کو چوری کرنے کی کوششیں بند کر دیں، بارہ ستمبر کو لوگ پی ٹی آئی پر عدم اعتماد کریں گے اورووٹ پر پہرہ دیں گے۔ انہوں نے کہا کہ بھوک و بیروزگاری بڑھ رہی ہے،حکومت کوئی کام ٹھیک نہیں لیکن بڑھکیں لگا رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہمار امطالبہ ہے کہ نعیم بٹ کے صاحبزادوں پر جرائم پیشہ لوگوں کے تشدد کا نوٹس لے کر انہیں پکڑ اجائے،اگر ہم سکیورٹی دیں گے تو اعتراض ہوگا، مجرموں کو پکڑیں وگرنہ سڑکوں پر احتجاج کریں گے پھر جو ہوگا دیکھی جائے گی۔

سعد رفیق

مزید :

صفحہ آخر -