اپنے اغواءکا ڈرامہ رچا کر دوستوں سے لاکھوں روپے ہتھیانے والے کو بڑی سزا سنادی گئی

 اپنے اغواءکا ڈرامہ رچا کر دوستوں سے لاکھوں روپے ہتھیانے والے کو بڑی سزا ...
 اپنے اغواءکا ڈرامہ رچا کر دوستوں سے لاکھوں روپے ہتھیانے والے کو بڑی سزا سنادی گئی

  

لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) اپنے اغواءکا ڈرامہ رچا کر دوستوں سے 10ہزار پاﺅنڈ (تقریباً 23لاکھ 11ہزار روپے) کی رقم ہتھیانے والے بلیک میلر کو قید کی سزا سنا کر جیل بھجوا دیا گیا۔ دی سن کے مطابق اس 23سالہ نوجوان کا نام کرسٹوفر سیل مین ہے جس نے اپنے اغواءکا ڈرامہ رچایا اور خود ہی اغواءکار بن کر اپنے دوستوں سے تاوان کی رقم وصول کرتا رہا۔ وہ دوستوں کو اپنی تصاویر بھیجتا رہا جس میں کہیں اس کے منہ میں بندوق کی نالی رکھی ہوتی تھی، کہیں اس کے گلے پر استرا رکھا ہوتا تھا اور کہیں اسے پانی میں غوطے دیئے جا رہے ہوتے تھے۔ 

ان تصاویر کی وجہ سے دوست اس کے متعلق فکر مند رہے اور اغواءکاروں کو رقم بھیجتے رہے۔ جب وہ 10ہزار پاﺅنڈ بھیج چکے اور اغواءکاروں کی بلیک میلنگ نہ رکی تو بالآخر انہوں نے پولیس کو رپورٹ کر دی اور پولیس نے حیران کن طور پر کرسٹوفر کی خستہ حال انگریزی کی وجہ سے اسے پکڑ لیا۔ پولیس نے اس کے دوستوں کو بھیجے کے میسجز پڑھے اور پھر اغواءکاروں کی طرف سے آنے والے میسجز بھی دیکھے۔ پولیس والے یہ دیکھ کر حیران ہوئے کہ دونوں جگہوں پر میسجز میں سپیلنگ اور گرائمر کی ایک جیسی غلطیاں تھیں لہٰذا انہیں شک ہوا کہ یہ میسجز ایک ہی آدمی لکھ رہا ہے۔

 اس پر پولیس نے کرسٹوفر کے ایشفرڈ میں واقع گھر پر چھاپہ مارا جہاں سے انہیں تصاویر میں نظر آنے والے ہتھیار برآمد ہو گئے۔ تفتیش میں معلوم ہوا کہ اس واردات میں کرسٹوفر کی 28سالہ گرل فرینڈ سٹیفنی گیب بھی اس کا ساتھ دے رہی تھی۔ دونوں کو گرفتار کرکے عدالت میں پیش کیا گیا جہاں سے اب کرسٹوفر کو 2سال 4ماہ اور اس کی گرل فرینڈ کو 18ماہ قید کی سزا سنا کر جیل بھجوا دیا گیا ہے۔

مزید :

برطانیہ -