سردار تنویر الیاس کا وزارت عظمیٰ سنبھالنے کے بعد پہلا دورہ باغ ،نئی تاریخ رقم کردی

سردار تنویر الیاس کا وزارت عظمیٰ سنبھالنے کے بعد پہلا دورہ باغ ،نئی تاریخ ...
سردار تنویر الیاس کا وزارت عظمیٰ سنبھالنے کے بعد پہلا دورہ باغ ،نئی تاریخ رقم کردی

  

باغ(ڈیلی پاکستان آن لائن)وزارت عظمیٰ کا منصب سنبھالنے کے بعد سردار تنویر الیاس خان نے باغ کا پہلا دورہ کیا اور اس موقع پر بھرپور عوامی طاقت کا مظاہرہ کیاگیا، بھرپور عوامی اجتماع نے سردار تنویر الیاس خان کی عوامی مقبولیت پر مہر تصدیق ثبت کردی۔

تفصیلات کے مطابق  سردار تنویر الیاس وزارت عظمیٰ کا منصب سنبھالنے کے بعد پہلی بار اپنے آبائی علاقہ اور حلقہ انتخاب میں آئے تو ان کے استقبال کے لیے غیر معمولی انتظامات کیے گئے تھے ۔وزیراعظم پروگرام کے مطابق مظفرآباد سے دیگر ساتھی وزراءکے ہمراہ باغ کے لیے روانہ ہوئے تو راڑہ اوردولائی کے مقام پر ان کا پر تپاک استقبال کیا گیا۔ کوہالہ سے دھیر کوٹ،ارجہ،منگ بجری،ہاڑی گہل،نعمان پورہ اور باغ تک جگہ جگہ سردار تنویر الیاس خان کا پرجوش اور فقیدالمثال استقبال کیا گیا۔

تحریک انصاف کے کارکنوں اور حلقہ انتخاب سے ووٹرز نے پھولوں کی پتیاں نچھاور اور پرجوش نعرے لگاکر اپنے ہر دلعزیز قائد کا استقبال کیا۔وزیراعظم کا قافلہ جگہ جگہ استقبال کی وجہ سے تاخیر کا شکار ہوا اور شام کے بعد جلسہ عام میں پہنچ سکا جہاں سردار تنویر الیاس خان نے اپنے روایتی انداز میں پرجوش خطاب کیا اور بھرپور استقبال پر پارٹی کارکنوں اور حلقہ کے عوام کا شکریہ ادا کیا۔

سردار تنویر الیاس خان نے اپنے حلقہ انتخاب اور باغ کے لیے خصوصی پیکیج کا بھی اعلان کیا۔ باغ،وسطی باغ سمیت مضافاتی علاقوں سے بھی بڑی تعداد میں لوگوں نے استقبالیہ پروگرام اور جلسہ میں شرکت کی۔سردار تنویر الیاس اس استقبالیہ پروگرام اور جلسہ عام کے ذریعے بھرپور عوامی طاقت کا مظاہرہ کر کے اپنے مخالفین پر دباو ڈالنے میں کامیاب ہوگئے ہیں۔انہیں آزادکشمیر کے لاکھوں عوام کی ہمدردیاں اور تائید وحمایت حاصل ہوچکی ہے۔

سردار تنویر الیاس خان کے بارے میں عوامی سطح پر یہ تاثر مضبوط ہوگیا ہے کہ اپنے ویژن کے مطابق وہ خطہ کو ترقی اور خوشحالی کی جانب گامزن کرنے میں کامیاب ہوجائیں گے۔ ان کے دورہ باغ کے دوران والہانہ اور شاندار استقبال کے بعد ان کے خلاف پارٹی کے اندر اور باہر سے جاری سازشیں دم توڑ گئی ہیں۔وہ  مثبت جمہوری طرز عمل کے ذریعے تمام مکاتب فکر کو ساتھ لے کر چلنے کی حکمت عملی کے تحت آزادکشمیر میں بڑے بڑے سیاستدانوں کو پیچھے چھوڑ چکے ہیں۔

مزید :

علاقائی -آزاد کشمیر -مظفرآباد -