آڈٹ کیلئے درکار معلومات فراہم کی جارہی ہیں:واپڈا

آڈٹ کیلئے درکار معلومات فراہم کی جارہی ہیں:واپڈا

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

لاہور(کامرس رپورٹر) واپڈا ترجمان نے بعض اخبارات میںآڈیٹر جنرل پاکستان کی 2013-14 ء کی آڈٹ رپورٹ کے حوالے سے چھپنے والی خبر کی وضاحت کی ہے جس میں رپورٹ کیاگیا ہے کہ وزارت پانی وبجلی کے زیرِانتظام چلنے والے ادارے واپڈا سمیت دیگر پاور کمپنیز کے اکاؤنٹس میں 980 ارب روپے کے غبن اور بے ضابطگیاں کی گئیں۔ترجمان نے کہا ہے کہ خبر میں مذکور980 ارب روپے کا تعلق سال 2012-13 ء میں واپڈا ، پیپکو، ڈ سکوز، جینکوز اور نیشنل ٹرانسمیشن اینڈ ڈسپیچ کمپنی کے ڈرافٹ پیرا اور آڈٹ اعتراضات سے ہے، جنہیں 2013-14 ء کی آڈٹ رپورٹ میں شامل کیا گیا ہے۔ ان آڈٹ پیروں میں سے 11 ارب 97 کروڑ40 لاکھ روپے کا تعلق واپڈا سے ہے جن کی تعداد 55 ہے۔ پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کے 8 اور 9 دسمبر 2015 ء کو ہونے والے اجلاس میں اِن میں سے 45 پیرے طے ہوچکے ہیں جو 10ارب50 کروڑ60 لاکھ روپے کے ہیں جبکہ ایک ارب 46 کروڑ70 لاکھ روپے کے 10 پیروں پر آڈٹ اعتراضات باقی ہیں اور اس حوالے سے درکار معلومات فراہم کی جارہی ہیں۔

مزید :

کامرس -