مزار بی بی پاک دامن کی ناقص سیکیورٹی ، دہشتگردی کا خطرہ

مزار بی بی پاک دامن کی ناقص سیکیورٹی ، دہشتگردی کا خطرہ

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

 لاہور(بلال چودھری)دہشت گردی کے خطرہ کی وجہ سے بی بی پاک دامن کے مزار پر زائرین کی تعداد میں کمی،سیکیورٹی کے انتظامات بھی نہ ہونے کے برابر ،مزارکے اطراف میں موجود گلیوں میں گندگی کے ڈھیر ،ٹوٹی سڑکیں اور بازار میں مہنگی اشیاء کی فروخت نے زائرین کا جینا محال کر دیا ہے ۔پاکستان سروے میں گفتگو کرتے ہوئے بی بی پاک دامن کے مزار پر آئے زائرین محمد علی ،امجد ،حسین ،ابتسام ،تنویر ،ارشد وغیرہ نے بتایا کہ یہاں تو کھڑے ہونے کی جگہ نہیں ملتی تھی لیکن دہشتگردی کے خطرے اور سیکیورٹی کے ناقص انتظامات کی وجہ سے کئی روز سے یہاں پر اب رش دیکھنے میں نہیں آ رہا ۔انہوں نے کہا کہ حضرت بی بی پاکدامن کا مزار شیعہ اور بریلوی سنی مسلمانوں کے لیے یکساں مقدس مانا جاتا ہے اور یہاں زیادہ تر خواتین زیارت کے لیے آتی ہیں۔ اس مزار کے تمام داخلی راستوں پر دس خواتین پولیس اہلکار تعینات کردی گئی ہیں کسی عورت کو تلاشی کے بغیر اندر نہیں جانے دیا جاتا اورکوئی تھیلا یا بیگ بھی اندر لے جانے کی اجازت نہیں ہے۔ لیکن مزار کے باہر گلیوں میں لوگوں کی بڑی تعداد موجود ہوتی ہے جن کی سیکیورٹی کا کوئی انتظام نہیں ہوتا ۔مزار کے سامنے نیاز کی دیگیں فروخت کرنے والے علی نے بتایا کہ پہلے وہ 20سے 25 دیگیں روزانہ فروخت کردیتے تھے لیکن اب یہ تعداد کم ہوکر 5 سے 10تک رہ گئی ہے جس کی وجہ لوگوں میں عدم تحفظ کا احساس ہے ۔ زائرین کا کہنا تھا کہ صفائی کا نظام نہایت ناقص ہے مزار کی اطراف میں گندگی کے ڈھیر لگے پڑے ہیں جبکہ انتظامیہ کی جانب سے صفائی کے نہایت ناقص انتظامات ہیں اور خاکروب یہاں دیکھنے میں نہیں آتے ۔ انہوں نے کہا کہ یہاں موجود دکانوں میں پھول اور دیگیں بیچنے والوں کی بڑی تعداد موجود ہے لیکن ان کے ریٹ بازار سے کئی گنا زیادہ ہیں ان کو پوچھنے والا کوئی نہیں جس کی وجہ سے زائدین شدید مشکلات کا شکار ہیں ۔دوسری جانب بازار کے دکانداروں سے گفتگو کی گئی تو ان کا کہنا تھا کہ یہاں پر گلیوں کی سڑکیں ٹوٹی ہوئی ہیں ۔ زائرین کے رش میں کمی کی وجہ سے کاروبار میں مندہ جا رہاہے جبکہ دوسری جانب دکانوں کے کرائے بھی یہایت زیادہ ہیں ۔ایسے میں وہ بازار سے زیادہ ریٹ نہ رکھیں تو کیا کریں ۔انہوں نے ضلعی حکومت سے اپیل کی کہ مزار کی اطراف میں موجود گلیوں میں موجود بازاروں کی سڑکوں کی مرمت کی جائے اور سیکیورٹی کے اقدامات موثر بنائے جائیں ۔