اراضی ریکارڈ سنٹر ز کی ایڈمنسٹریٹو اتھارٹی متعلقہ ڈسٹرکٹ کلکٹر کو بنا دیا گیا

اراضی ریکارڈ سنٹر ز کی ایڈمنسٹریٹو اتھارٹی متعلقہ ڈسٹرکٹ کلکٹر کو بنا دیا ...

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


لاہور(اپنے نمائندے سے)بہتر سروس کی فراہمی،عوامی شکایات کے تدارک اور کرپشن کی روک تھام کے لئے صوبے بھر کے 36اضلاع اور 143تحصیلوں میں پراجیکٹ مینجمنٹ یونٹ کے زیر انتظام چلنے والے اراضی ریکارڈ سنٹر ز کی ایڈمنسٹریٹو اتھارٹی متعلقہ ضلع کے ڈسٹرکٹ کلکٹر کو بنا دیا گیا ،اسسٹنٹ ڈائریکٹر لینڈ ریکارڈ،سروس سنٹرز انچارج اور اسسٹنٹ سروس سنٹرز انچارج کے تبادلے کا اختیار متعلقہ ڈویژن کے کمشنرز کو سپرد ،ڈسٹرکٹ کلکٹرانٹرنیٹ کے ذریعے لنک سپیشل کیمروں کی مدد سے اراضی ریکارڈ سنٹرز کی ڈائریکٹ مانٹرنگ کریں گے ، بورڈ آف ریونیو کی جانب سے جاری کر دہ لیٹر نمبر A 120-214/P مورخہ24-11-2014کے مطابق پورے پنجاب میں اراضی ریکارڈسنٹرز کی کمپیوٹرائزیشن کے بعد صوبے بھر کی 9ڈویژن کے 36اضلاع اور 143تحصیلوں میں قائم اراضی ریکارڈ سنٹرز کی مانیٹرنگ،کام کے تسلسل ،کھیوٹ ،کھتونی اور ریکارڈ کی کمپیوٹرائزیشن کے حوالے سے پیش آنے والے مسائل کے حل اور کرپشن کی روک تھام کے لئے سخت ایکشن لینے کے اختیار متعلقہ ضلع کے ڈسٹرکٹ کلکٹر کے سپرد کر دیئے گئے ہیں ،پنجاب کی 9ڈویژن کے کمشنرزکو اے ڈی ایل آرز ،ایس سی او اور اے ایس سی او کے تبادلے کے اختیار دیئے گئے ہیں لیکن یہ ٹرانسفر پوسٹنگ صرف اسی ڈویژن کے اندر ہو ں گئی ،اس کے علاوہ ڈسٹرکٹ کلکٹر کو اے ڈیل آر کی چھٹیاں منظور کرنے جبکہ سروس سنٹر آفیشل،ریونیو آفیسر ،آفس بوائے ،چوکیدار اور سویپر متعلقہ تحصیل کے اسسٹنٹ کمشنر کی منظوری سے بیماری یا ایمرجنسی کی چھٹی لے سکیں گے جبکہ ڈسٹرکٹ کلکٹر کی حتمی منظوری بھی ضروری قرار دی گئی ہے،ان اختیارات سے بورڈ آف ریونیو کے ان اختیارات پر کوئی فرق نہیں پڑے گا جس کے تحت اے ڈی ایل آر اور ایس سی او کو ضلع ،ڈویژن کے اندر یا باہر تقرر یا تبادلے کے اختیار حاصل ہیں ،گزشتہ چند ماہ سے صوبے بھر میں پراجیکٹ مینجمنٹ یونٹ کے تحت چلنے والے کمپیوٹرائزڈ سروس سنٹر ز میں کرپشن کی متعدد شکایات،پبلک انٹرسٹ اور کئی سروس سنٹرز انچارج کی رشوت لیتے ہوئے رنگے ہاتھو ں گرفتاری کے بعد سروس سنٹر کی مانیٹرنگ کے لئے ڈسٹرکٹ کلکٹر آفس میں ڈائریکٹ لنک کے لئے کیمروں کی تنصیب کا کام ایک ہفتے میں مکمل کیا جائے گا جس کو انٹرنیٹ کے خاص آئی پی لنک کے ذریعے ڈسٹرکٹ کلکٹر آفس سے براہ راست مانیٹرکیاجائے گا ،ریونیو ذرائع کے مطابق ڈسٹرکٹ کلکٹر کو اختیارات منتقل ہونے سے عوامی شکایات میں کمی آئے گی ،کام کا بوجھ کام ہو گا،ڈسٹرکٹ کلکٹر آفس سے براہ مانیٹرنگ سے کرپشن اور رشوت وصولی کی شکایات کا بھی خاتمہ اور فوری ایکشن لیا جائے گا۔

مزید :

صفحہ آخر -