دسٹر کٹ کونسلرز اور ڈبلیو ای پی کا نیبر ہوڈ کونسلوں کی سطح پر کمیٹیان بنانے کا فیصلہ

دسٹر کٹ کونسلرز اور ڈبلیو ای پی کا نیبر ہوڈ کونسلوں کی سطح پر کمیٹیان بنانے ...

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

 پشاور (پاکستان نیوز) منتخب ڈسٹرکٹ کونسلرز اور واٹر اینڈ سینی ٹیشن سروسز پشاور (ڈبلیو ایس ایس پی) نے لوگوں کی جانب سے گلی محلوں، سڑکوں اور جگہ جگہ گندگی پھینکنے کے خاتمے کے لئے نیبرہوڈ کونسلوں کی سطح پر کمیٹیاں بنانے کا فیصلہ کرلیا ہے جس میں متعلقہ منتخب نمائندے، علاقے کے معززین اور ڈبلیو ایس ایس پی کے نمائندے شامل ہوں گے کمیٹیاں گلی، محلوں اور سڑکوں پر گندگی پھینکنے کی روک تھام کے لئے لوگوں کو مخصوص مقام پر گندگی پھینکنے کی طرف راغب کریں گی، مختلف علاقوں میں جاری پانی فراہمی، نکاسی آب کے منصوبوں کا مشترکہ معائنہ کیا جائے گا اس سلسلے میں میونسپل سروسز پروگرام اور دیگر محکموں سے بھی رابطہ کیا جائے گاڈسٹرکٹ کونسلر تقدیر علی کو ڈبلیو ایس ایس پی کے ساتھ رابطے کے لئے فوکل پرسن مقرر کیا گیا۔ یہ فیصلے ڈبلیو ایس ایس پی کے بورڈ آف ڈائریکٹرز کے چیئرمین خالد مسعود کی صدارت میں ہونے والے ڈسٹرکٹ کونسلرز اور ڈبلیو ایس ایس پی حکام کے اجلاس میں کئے گئے جس میں ڈسٹرکٹ کونسلرز محمد نواز، رحمن افضل، تاج محمد، نعمت، چیف ایگزیکٹو آفیسر ڈبلیو ایس ایس پی انجینئر محمد نعیم خان، جنرل منیجر آپریشنز ناصر غفور خان، زونل منیجرز اشراف قادر، عارف رؤف، علی خان، امین گل شنواری اور منیجر پراجیکٹ شیدا محمد نے شرکت کی۔ ڈسٹرکٹ کونسلرز نے یکہ توت، وزیر باغ، نذر گڑھی، امین کالونی، باغبانان، چن آغا کالونی، محلہ ستار شاہ بادشاہ ، کوہاٹ روڈ، سول کالونی، بھانہ ماڑی، قائد آباد، کاکشال، رشید گڑھی، چوک ناصر خان سمیت مختلف علاقوں میں پانی، صفائی اور نکاسی آب بارے مسائل سے آگاہ کیا اجلاس میں شاہی کھٹہ پر تجاوزات کی وجہ سے درپیش مشکلات پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا اور ڈسٹرکٹ کونسلرز سے مطالبہ کیا گیا کہ شاہی کھٹہ سے تجاوزات ہٹانے میں اپنا کردار ادا کرے جنہوں نے مسئلہ ڈسٹرکٹ اسمبلی میں اٹھانے کا وعدہ کیا۔ڈسٹرکٹ کونسلرز کو پانی، صفائی ، نکاسی آب اور پائپ لائن کی تبدیلی بارے جاری اور مجوزہ منصوبوں سے آگاہ کیا گیا اور یقین دلایا گیا کہ صفائی و پانی کے مسائل فوری بنیادوں پر حل کئے جائیں گے نیا عملہ بھرتی کیا جارہا ہے جہاں کمی ہے وہاں اہلکار تعینات کئے جائیں گے، گاڑیوں کا جلد بندوبست کیا جائے گا عملے کی حاضری یقینی بنانے کے لئے ایک زون میں تجرباتی بنیادوں پر حاضری کا ٹیکنالوجی پر مبنی نظام متعارف کرایا جارہا ہے۔ چیئرمین خالد مسعود نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ نکاسی آب کا نظام مغل دور کا ہے جس پر بوجھ بڑھ گیا ہے نکاسی آب میں رکاوٹ بننے والی غیر قانونی تعمیرات ہٹانے میں کونسلرز تعاون کریں اس مقصد کے لئے قانونی راستہ اختیار کیا جائے گا، جہاں پائپ ناقابل استعمال پڑے ہیں وہ استعمال میں لائے جائیں گے جس کے لئے ڈبلیو ایس ایس پی اور میونسپل سروسز پروگرام کے نمائندوں پر مبنی کمیٹی دوبارہ فعال کی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ شہریوں کو دن رات پانی کی فراہمی یقینی بنانے کے لئے ٹینکیوں کا نظام متعارف کرایا جارہا ہے جو بھی کام ہوگا منتخب نمائندوں کو اعتماد میں لیا جائے گا۔ انہوں نے ہدایت کی کہ گھر گھر سے کوڑا اٹھانے کے منصوبے پر کام تیز کیا جائے تاکہ جگہ جگہ بننے والے گندگی کے ڈھیروں سے نجات مل جائے، نکاسی آب کے نالوں پر غیر قانونی تعمیرات کی مفصل رپورٹ تیار کی جائے تاکہ معاملہ حکومت کے ساتھ اٹھایا جائے۔ چیف ایگزیکٹو آفیسر انجینئر محمد نعیم خان نے کہا کہ ٹرانسفارمر 12 اور ٹیوب ویل 24 گھنٹوں میں ٹھیک کیا جارہا ہے شکایات کا 24 سے 36 گھنٹے میں ازالہ کیا جاتا ہے، اب تک ہزاروں فٹ پائپ لائن تبدیل کی گئی ہے، لیکج کا مسئلہ فوری بنیادوں پر حل کیا جائے گا، شاہی کھٹہ اور محمد زئی نالے پر غیر قانونی تعمیرات سے نکاسی آب کے نظام خلل پڑ رہا ہے منتخب اس سلسلے میں اپنا