ٹیکس ایمنیسٹی سکیم کا اعلان انقلابی قدم ہے، ایف پی سی سی آئی

ٹیکس ایمنیسٹی سکیم کا اعلان انقلابی قدم ہے، ایف پی سی سی آئی

اسلام آباد (اے پی پی)وفاق ایوان ہائے صنعت وتجارت (ایف پی سی سی آئی) کے چیئرمین مین کو آرڈینیشن ملک سہیل حسین نے کہا ہے کہ حکومت کی جانب سے ٹیکس ایمنیسٹی سکیم کا اعلان ایک انقلابی قدم ہے جس سے عوام اور کاروباری برادری پر بوجھ میں کم از کم نوے ارب روپے کی کمی آئے گی، عرصہ دراز سے سالانہ چار لاکھ تک کی آمدنی ٹیکس سے مبرا تھی جو زمینی حقائق کے مطابق نہیں تھی جسے اب اس بڑھا کر بارہ لاکھ کر دیا گیا ہے۔ اتوار کویہاں جاری بیان میں انہوں نے کہاکہ کہ ٹیکس گزاروں اور فائلرزکی تعداد میں کمی ایف بی آر کیلئے ایک دھچکا ثابت ہو سکتی تھی کیونکہ ملک میں نصف فیصد سے کم لوگ ٹیکس ادا کر رہے ہیں۔

جس نے ملک کو محتاج بنا ڈالا جبکہ بھارت میں 4.7 فیصد اور کینیڈا میں اسی فیصد لوگ ٹیکس ادا کرتے ہیں۔اس مسئلے سے نمٹنے کیلئے ٹیکس نیٹ کو پھیلانا ضروری ہو گیا ہے ۔انہوں نے کہاکہ ود ھولڈنگ ٹیکس پر مزید انحصار بڑھانے کی ضرورت نہیں ہے کیونکہ اس سے عوام اور کاروباری برادری متاثر ہو گی اور ملک میں غربت بڑھے گی۔ ملک سہیل حسین نے کہا کہ بیرون ملک اثاثے رکھنے والوں پر ٹیکس کم از کم دس فیصدتک بڑھانے جبکہ موجودہ ٹیکس گزاروں کو مزید ریلیف دینے کی تجویز بھی دی ۔انھوں نے کہا کہ حکومت ٹوٹل آڈٹ کے کیسوں پر بھی غور کرے ۔ٹوٹل آٹ کے مقدمات سالہا سال سے چل رہے ہیں جنھیں ریلیف دیا جائے اور اس معاملہ میں کرپشن کا خاتمہ کرنے اور ٹوٹل آدٹ کے متاثرین کو بھی اس سکیم میں شامل کیا جائے تاکہ کاروباری برادری یکسوئی سے ملکی ترقی کے عمل میں اپنا کردار ادا کر سکے۔

مزید : کامرس