فیض آباد معاہدے پر مکمل عملدرآمد تک دھرنا جاری رہے گا: خادم رضوی

فیض آباد معاہدے پر مکمل عملدرآمد تک دھرنا جاری رہے گا: خادم رضوی

لاہور( مانیٹرنگ ڈیسک )تحریک لبیک پاکستان کا داتا دربار کے سامنے دھرنا ساتویں روز میں داخل ہوگیا ۔ جماعت کے سربراہ خادم حسین رضوی کا کہنا ہے کہ فیض آباد معاہدے پر مکمل عمل درآمد تک دھرنا جاری رہے گا۔ دھرنے کے شرکا سے خطاب کرتے ہوئے خادم حسین رضوی نے کہا کہ ’ہماری جماعت کا دہشت گردوں سے کوئی تعلق نہیں، ہم پْرامن لوگ ہیں اور صرف فیض آباد معاہدے پر مکمل عمل چاہتے ہیں‘۔ ہم ختم نبوت کے قانون میں تبدیلی کرنے والوں کو قوم کے سامنے لانا چاہتے ہیں۔ لوگ دھرنے کی وجہ سے مشکلات کا شکار ہیں مگر یہ حضور اکرم ؐ کی شان میں گستاخی کرنے والوں کے خلاف ہے۔ان کا کہنا تھا کہ جب تک ہمارے مطالبات مان نہیں لیے جاتے ہمارا دھرنا جاری رہے گا۔رواں سال میں ہونے والے انتخابات کے حوالے سے خادم حسین رضوی کا کہنا تھا کہ تحریک لبیک پاکستان آئندہ الیکشن میں بھر پور حصہ لے گی۔ 3 اپریل کو تحریک لبیک پاکستان کے سربراہ اور تحریک لبیک یارسول اللہ کے قائدین کو انسداد دہشت گردی کی عدالت کی جانب سے اشتہاری قرار دیا گیا تھا تاہم قانون نافذ کرنے والے اداروں کی جانب سے ان کی گرفتاری اب تک عمل میں نہیں لائی جاسکی۔اس سے قبل اسلام آباد کی عدالت نے 24 مارچ 2018 کو خادم حسین رضوی اور دیگر مظاہرین کو گرفتار کرکے پیش کرنے کا حکم دیا تھا۔

خادم رضوی۔

مزید : صفحہ آخر