اشیائے خوردونوش کی قیمتوں میں 30فیصد اضافہ

اشیائے خوردونوش کی قیمتوں میں 30فیصد اضافہ

لاہور(جاوید اقبال)صوبائی دارلحکومت میں رمضان کی آمد سے ایک ماہ پہلے ہی اشیائے خوردونوش کی قیمتوں میں اضافہ کردیا گیا ہے ۔ قیمتیں بڑھانے والے مافیا نے روٹی ،نان، دودھ،دہی ، مصالحہ جات ، گھی، آٹا، دالوں سمیت ہر چیز میں بیس سے تیس فیصد اضافہ کردیا ہے۔ دوسری طرف نومولود بچوں کے ڈبے کے دودھ کی قیمتوں میں بھی تیس سے پچاس روپے تک مختلف ناموں سے آنے والے دودھ کی قیمتوں میں اضافہ کردیا گیا ہے اس کا قابل افسوس پہلو یہ ہے کہ شہر میں اسی کے قریب پرائس کنٹرول مجسٹریٹس موجود ہے جنھوں نے نگرانی کرنے والے مافیا کو کھلی چھٹی دے دی ہے۔ بتایا گیا ہے کہ رمضان شروع ہونے سے قبل ہی مارکیٹوں میں مہنگائی کا نیا طوفان آگیا ہے۔ روٹی اور نان کی قیمتوں میں دو روپے کا اضافہ کردیا گیا ہے۔ دودھ کی قیمت میں مختلف علاقوں میں مختلف قیمتیں بڑھائی گئی ہیں۔ بعض علاقوں میں دس روپے کلو جبکہ بعض میں بیس روپے کلو دودھ کی قیمت بڑھائی گئی ہے۔ اسی طرح دہی کی سرکاری قیمت ستر روپے کلو ہے جس میں تیس روپے کلو کا اضافہ کرکے سو روپے کلو کردیا گیا ہے۔ اس طرح چینی کی قیمت میں چوون روپے کلو ہے جس میں چھ سے گیارہ روپے کا اضافہ کردیا گیا ہے جبکہ ڈیپارٹمینٹل سٹوروں پر چینی 74 روپے کلو فروخت کی جارہی ہے۔ اسی طرح گھی اور آئل کی قیمتوں میں پانچ روپے فی کلو اور فی لیٹر اضافہ کردیا گیا ہے۔ مصالحہ جات کی قیمتوں میں پانچ سے دس روپے کا اضافہ کردیا گیا ہے۔ چکن کی قیمتوں میں بے قابو ہے اور چھوٹے اوربڑے گوشت میں بیس روپے فی کلو کا اضافہ کردیا گیا ہے ۔ دالوں کی قیمتوں میں بھی دس روپے کا اضافہ کیا گیا ہے۔ اس حوالے سے میئر لاہور مبشر جاوید کا کہنا ہے کہ گرانفروشی کرنے والو ں کے خلاف آئینی ہاتھوں سے نمٹے گے اسی سلسلے میں ہر ڈپٹی میئر کو ٹاسک دیا گیا ہے کہ وہ مصنوعی مہنگائی کرنے والے کے خلاف کریک ڈاؤن کریں۔ ایسا کرنے والوں کو جیلوں میں بند کردے انہوں نے کہا کہ رمضان سے قبل سرکاری طور پر کسی قسم کی قیمتیں نئی بڑھائیں گئی جنھوں نے ایسا کیا ہے انہوں نے مصنوعی قیمتیں بڑھائی ہے۔ جن کے خلاف سخت کاروائی کا آغاز کیا جارہا ہے۔

مزید : میٹروپولیٹن 1