ٹیکس ایمنسٹی سکیم ،صدر کی منظوری کے بعد آرڈیننس جاری

ٹیکس ایمنسٹی سکیم ،صدر کی منظوری کے بعد آرڈیننس جاری

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر ،مانیٹرنگ ڈیسک )وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کی جانب سے چند روز قبل جاری کردہ ٹیکس ایمنسٹی سکیم کیلئے صدر مملکت ممنون حسین نے ایمنسٹی اسکیم کے آرڈیننس کی منظوری دیدی ہے۔اگر یہ ٹیکس ایمنسٹی سکیم پر صدارتی آرڈیننس کل سینیٹ کے اجلاس کے آغاز سے قبل جاری نہ ہوتی تو سکیم کا نفاذ مشکل ہو سکتا تھا،گزشتہ روز صدرمملکت ممنون حسین نے ٹیکس ایمنسٹی اسکیم کے آرڈیننس کی منظوری دے دی۔ا وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے 5 اپریل کو ٹیکس اصلاحات اور ایمنسٹی اسکیم کا اعلان کیا تھا جس کے تحت 12 سے 24 لاکھ روپے سالانہ آمدن پر 5 فیصد ، 24 سے 48 لاکھ روپے سالانہ پر 10 فیصد اور 48 لاکھ سے زائد سالانہ آمدن پر 15 فیصد ٹیکس دینا ہوگا۔ٹیکس ایمنیسٹی اسکیم 30 جون تک جاری رہے گی ، سیاسی افراد اور ان کے ماتحت ٹیکس ایمنسٹی اسکیم سے فائدہ حاصل نہیں کرسکیں گے جس کی منظوری اب صدر ممنون حسین نے دے دی ہے۔وزیراعظم کا کہنا تھا کہ یہ ایمنسٹی اسکیم کسی ایک شخص کے لیے نہیں بلکہ ہر اس شخص کے لیے ہے جو پاکستان کا شناختی کارڈ رکھتا ہے تاہم ٹیکس ایمنسٹی اسکیم سے سیاسی لوگ، ان کے زیر کفالت افراد اور سرکاری ملازمین فائدہ نہیں اٹھا سکیں گے۔وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ آف شور کمپنی اثاثہ ہے اسے بھی ظاہر کرنا چاہیے۔ ان کا کہنا تھا کہ جو لوگ ٹیکس ادا نہیں کریں گے ان کے خلاف ڈیٹا بیس استعمال کیا جائے گا اور ٹیکس نادہندہان کے خلاف کارروائی بھی ہو گی۔وزیراعظم پاکستان نے خبردار کیا تھا کہ اگر کسی نے جائیداد کی ڈیکلیئرڈ ویلیو مارکیٹ ویلیو کے برابر ظاہر نہیں کی تو حکومت اْس کی دگنی رقم سے خریدنے کا حق محفوظ رکھے گی۔

مزید : کراچی صفحہ اول