اگروکیل صفائی کے پاس کوئی سوال نہیں توجرح ختم کردیں،نیب پراسیکیوٹراور خواجہ حارث کے درمیان دوران جرح دوسری بار تلخ کلامی

اگروکیل صفائی کے پاس کوئی سوال نہیں توجرح ختم کردیں،نیب پراسیکیوٹراور خواجہ ...
اگروکیل صفائی کے پاس کوئی سوال نہیں توجرح ختم کردیں،نیب پراسیکیوٹراور خواجہ حارث کے درمیان دوران جرح دوسری بار تلخ کلامی

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)شریف خاندان کیخلاف ایون فیلڈ ریفرنس کے دوران نیب پراسیکیوٹر اور نوازشریف کے وکیل خواجہ حارث میں تلخ کلامی ہو گئی۔

خواجہ حارث کی واجد ضیا پر جرح کے دوران نیب پراسیکیوٹر نے کہا کہ یہ گواہ کوہراساں کررہے ہیں،اگروکیل صفائی کے پاس کوئی سوال نہیں توجرح ختم کردیں۔

نیب پراسیکیوٹرنے کہا کہ خواجہ حارث غیرضروری سوالات کررہے ہیں،عدالت فیصلہ کرے،خواجہ حارث اپنے سوالات کے حوالے سے عدالت کومطمئن کریں۔

اس پر نوازشریف کے وکیل نے کہا کہ کیا میں اپنادفاع پراسیکیوشن کے سامنے ظاہرکردوں؟،خواجہ حارث نے کہا کہ آپ کوپھرقطری شہزادے کوبھی بتاناچاہئے تھا۔

نیب پراسیکیوٹر نے کہا کہ آپ قطری شہزادے کویہاں لے آتے،آپ قطری شہزادے کوعدالت کیوں نہیں لائے؟۔

نیب پراسیکیوٹر نے کہا کہ کیا آپ گواہ کوہراساں نہیں کررہے،لگتا ہے آپ سچ اگلوانانہیں چاہتے۔

خواجہ حارث نے عدالت سے کہا کہ جج صاحب !ان کومسئلہ کیا ہے؟کیوں بار باراعتراض اٹھارہے ہیں۔

مزید : قومی /علاقائی /اسلام آباد