احتساب عدالت میں کارروائی ، نواز شریف نے بھی بھٹو کی طرح وکیل کیا

احتساب عدالت میں کارروائی ، نواز شریف نے بھی بھٹو کی طرح وکیل کیا

اسلام آباد (ویب ڈیسک) میاں نواز شریف،  مریم نواز شریف اور کیپٹن صفدر کے خلاف اسلام آباد کی احتساب عدالت میں مقدمہ زیر سماعت ہے ,میاں نواز شریف کے خلاف اصل مقدمہ مالی معاملات کا ہے جس میں ان پر الزام ہے کہ برطانیہ میں ان کی بیٹی اور بچوں کے نام جائیدادیں میاں نواز شریف کے اثر و رسوخ اور بدعنوانی سے بنائی گئی دولت سے خریدی گئی ہیں تاہم انہوں نے مالی معاملات پر گرفت رکھنے کی بجائے  کریمنل وکیل کی خدمات حاصل کیں اور ایسی ہی ایک مثال ماضی میں ذوالفقار بھٹو کی موجود ہے۔ 

یوٹیوب چینل سبسکرائب کرنے کیلئے یہاں کلک کریں

روزنامہ خبریں کے مطابق  میڈیکل شعبے میں ہر بیماری کے الگ ڈاکٹر  کی  طرح اب مقدمات میں بھی ماہرین ہیں جن کی تعداد زیادہ ہوگئی ، جیسے کرمنل مقدمات کا وکیل، سول مقدمات کا وکیل، انکم ٹیکس معاملات کا وکیل، مالی بے ضابطگی کا وکیل، منی لانڈرنگ کا وکیل وغیرہ وغیرہ۔ میاں نواز شریف کے خلاف مالی بے ضابطگی اور منی لانڈرنگ کا مقدمہ ہے جس کے لئے انہیں کوئی مالی معاملات کا ماہر اور تجربہ کار وکیل چاہیے تھا مگر انہوں نے کریمنل مقدمات کے وکیل کی خدمات حاصل کرلیں جس کا چیمبر اور ساری پریکٹس ہی کریمنل معاملات پر ہے جن میں قتل، چوری، قبضہ وغیرہ کے معاملات ہیں۔

میاں نواز شریف کو عدالت میں یہ ثابت کرنا تھا کہ ان کی یہ جائیدادیں ان کے بچوں کے نام ہیں، ان کا اس سے کوئی تعلق واسطہ نہیں اگر یہ جائیدادیں بچے ثابت نہیں کرسکتے تو میر ااس سے کیا تعلق ہوسکتاہے مگر ایک کریمنل وکیل کرکے اسی طرح کا معاملہ کیا گیا ہے جیسے ذوالفقار علی بھٹو نے اپنے مقدمے میں یحییٰ بختیار کو وکیل کرلیا تھا اور اس کے ساتھ کریمنل وکلاءکی ایک ٹیم رکھی مگر ان وکلاءکی ایک نہیں سنی جاتی تھی بلکہ اس مقدمے کو سیاسی مقدمے کے طو رپر لڑنے کا فیصلہ کیا گیا۔  لاہور میں جسٹس مولوی مشتاق کی عدالت اور پھر سپریم کورٹ میں جب وہ مال روڈ راولپنڈی پر تھی۔

نواز شریف کے وکیل کی گزشتہ روز ایک جرح کا حوالہ دینے سے ساری بات عیاں ہوجاتی ہے۔ انہوں نے جے آئی ٹی کے سربراہ سے پوچھا کہ میاں نواز شریف نے اپنے بچوں سے تنخواہ لی یا نہیں لی ، اگر لی تو کیسے لی کیوں لی وغیرہ وغیرہ۔ سپریم کورٹ آف پاکستان میاں نواز شریف کو بیٹے کی کمپنی سے تنخواہ لینے اور ظاہر نہ کرنے پر مجرم گردانتے ہوئے نااہل قرار دے چکی، اس پر اپیل بھی ختم کی گئی اب اس معاملے میں سوال و جواب کرکے کوئی اختیار خبر تو بنائی جاسکتی ہے مگر ان کو کوئی فائدہ نہیں ہوگا۔ 

مزید : علاقائی /اسلام آباد

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...