دبئی میں ہوٹل کی تیسری منزل سے نوجوان لڑکی نیچے گر گئی، پھر پولیس نے اس کی موت کی تفتیش شروع کی تو ایسا شرمناک ترین انکشاف کہ ہر کوئی دنگ رہ گیا، دراصل اسے کمرے میں بند کر کے۔۔۔

دبئی میں ہوٹل کی تیسری منزل سے نوجوان لڑکی نیچے گر گئی، پھر پولیس نے اس کی موت ...
دبئی میں ہوٹل کی تیسری منزل سے نوجوان لڑکی نیچے گر گئی، پھر پولیس نے اس کی موت کی تفتیش شروع کی تو ایسا شرمناک ترین انکشاف کہ ہر کوئی دنگ رہ گیا، دراصل اسے کمرے میں بند کر کے۔۔۔

  

دبئی سٹی(مانیٹرنگ ڈیسک) جسم فروشی کے لئے دبئی کے ایک ہوٹل کے کمرے میں جانے والی لڑکی تین وحشی غیر ملکیوں کے چنگل میں پھنس گئی جنہوں نے ناصرف اسے ہوس کا نشانہ بنایا بلکہ اس کی المناک موت کا سبب بھی بن گئے۔ جنسی درندوں کی قید سے نکلنے کی کوشش میں یہ بدقسمت لڑکی ہوٹل کی تیسری منزل کی بالکونی سے گری اور موقع پر ہی دم توڑ گئی۔

یوٹیوب چینل سبسکرائب کرنے کیلئے یہاں کلک کریں

گلف نیو زکے مطابق یہ افسوسناک واقعہ نومبر میں القصیص کے علاقے میں پیش آیا۔ لڑکی کی ملاقات ازبکستان سے تعلق رکھنے والے تین افراد سے ایک نائٹ کلب میں ہوئی تھی۔ ان کے درمیان ایک ہزار درہم میں معاملہ طے پایا اور تینوں افراد لڑکی کو اپنے ساتھ ہوٹل لے گئے۔ کمرے میں تینوں افراد نے لڑکی کے ساتھ جسمانی تعلق استوار کیا تاہم بعد ازاں رقم کی ادائیگی کے معاملے پر جھگڑا ہو گیا۔ پولیس ریکارڈ کے مطابق ملزمان نے لڑکی کو تشدد کا نشانہ بنایا، اس کے پاس موجود 2300 درہم چھین لئے اور اسے کمرے میں بند کردیا۔ جب لڑکی جان بچانے کی کوشش میں کمرے سے فرار ہونے کی کوشش کر رہی تھی تو ایک بالکونی سے دوسری پر چھلانگ لگاتے ہوئے تیسری منزل سے نیچے گری اور موقع پر ہی دم توڑ گئی۔ پولیس کا کہنا ہے کہ لڑکی کے جسم پر چاقو کے زخموں کے نشانات تھے جو اس بات کا ثبوت ہے کہ موت سے قبل اسے بدترین تشدد کا نشانہ بنایا گیا تھا۔

ملزمان نے عدالت کے سامنے اعتراف کیا کہ انہوں نے رقم کے عوض لڑکی کے ساتھ جسمانی تعلق استوار کیا تاہم انہوں نے اس الزام کو ماننے سے انکار کیا کہ انہوں نے اس سے رقم چھینی یا اس کی موت کا سبب بنے۔ عدالت نے اس مقدمے کی سماعت 17 اپریل تک ملتوی کر دی ہے۔

مزید : عرب دنیا