اگر محفوظ رہنا چاہتے ہیں تو یہ 12 چیزیں آپ کو اپنے فیس بک کے اکاﺅنٹ سے فوری ڈیلیٹ کر دینی چاہئیں

اگر محفوظ رہنا چاہتے ہیں تو یہ 12 چیزیں آپ کو اپنے فیس بک کے اکاﺅنٹ سے فوری ...

سان فرانسسکو(نیوز ڈیسک) دنیا کے اربوں سوشل میڈیا صارفین کی زندگی میں فیس بک ایک اہم عامل بن چکا ہے۔ دنیا بھر میں فیس بک کے صارفین کی تعداد 1ارب 86کروڑ سے تجاوز کرچکی ہے۔ اگر مختلف ممالک کی آبادی سے اس کا تقابل کریں تو چین کی آبادی ایک ارب 37 کروڑ، بھارت کی ایک ارب 27کروڑ ہے۔ اسی طرح واٹس ایپ کے صارفین ایک ارب دو کروڑ سے زائد ہیں جبکہ انسٹاگرام کے صارفین 60 کروڑ سے زائد ہیں۔ اگر فیس بک اور اس کے متعلقہ سوشل میڈیا اداروں کو دیکھا جائے تو ان کے صارفین کی مجموعی تعداد ساڑھے تین ارب سے زائد ہے۔ حال ہی میں کیمبرج اینا لیٹکا کا سکینڈل سامنے آیا تو ان اربوں صارفین کو اپنے ڈیٹا کی فکر لاحق ہوئی اور بہت سے لوگوں نے تو اپنے اکاﺅنٹ ڈیلیٹ کرنا شروع کردئیے۔ ایسے میں ٹیکنالوجی ماہرین کا کہنا ہے کہ آپ سوشل میڈیا پر محفوظ رہ سکتے ہیں مگر اس کے لئے آپ کو معلوم ہونا چاہیے کہ کون سی ذاتی معلومات سوشل میڈیا پر پوسٹ کرنی ہیں اور کون سی ہمیشہ خفیہ رکھنی ہیں۔

مثال کے طور پر آپ کی تاریخ پیدائش ان حساس معلومات میں شامل ہے جسے آپ کے بینک اکاﺅنٹ تک رسائی حاصل کرنے کے لئے استعمال کیا جا سکتا ہے ۔ اس سے آپ کے سوشل میڈیا کی سکیورٹی سیٹنگز میں بھی دخل اندازی کی جاسکتی ہے، لہٰذا بہتر ہے کہ اپنی تاریخ پیدائش کی معلومات کو فیس بک، یا اس جیسی دوسری ویب سائٹوں سے فوری ڈیلیٹ کر دیں۔

اگر آپ اپنا فون نمبر سوشل میڈیا پر ظاہر کرتے ہیں تو اس کا بھی غلط استعمال ہوسکتا ہے۔ کوئی بھی شخص آپ کا فون نمبر لے کر آپ کے ایڈریس کی معلومات حاصل کرنے سے لے کر آپ کو بے جا تنگ کرنے جیسی کارروائیاں کرسکتا ہے لہٰذا اسے بھی ڈیلیٹ کر دیں۔

آکسفورڈ کے ماہر نفسیات پروفیسر رابن ڈن بار کہتے ہیں کہ ایک صحت مند انسان زیادہ سے زیادہ 150 افراد کے ساتھ دوستانہ تعلق برقرار رکھ سکتا ہے۔ فیس بک پر جب آپ کے دوستوں کی تعداد اس سے زیادہ بڑھنے لگتی ہے تو یہ آپ کے لئے مسلسل نفسیاتی دباﺅ کا سبب بننے لگتے ہیں، اس لئے بہتر ہے کہ اپنے دوستوں کی فہرست میں سے اضافی لوگوں کو ڈیلیٹ کر دیں۔

اپنے بچوں او ردیگر قریبی اہلخانہ کی تصویر کو سوشل میڈیا پر پوسٹ کرنے سے ہمیشہ گریز کریں۔ یہ تصاویر چوری ہوسکتی ہیں اور ان کا غلط استعمال ہوسکتا ہے۔ ایسی تصاویر پوسٹ کر چکے ہیں تو فوراً سے پہلے انہیں ڈیلیٹ کریں۔

اسی طرح سوشل میڈیا پر یہ کبھی مت بتائیں کہ آپ کا بچہ کس سکول میں جاتا ہے یا اپنی فیملی کے کم عمر افراد کے متعلق بھی اس نوعیت کی معلومات مت فراہم کریں۔ سوشل میڈیا پر فراہم کی گئی اس طرح کی تمام معلومات کو ڈیلیٹ کر دیں۔

لوکیشن سروس کو آف کردینا بھی آپ کے حق میں بہتر ہے کیونکہ اس کی مد دسے کوئی بھی شخص آپ کی لوکیشن کی معلومات حاصل کرسکتا ہے اور ان معلومات کا غلط استعمال ہوسکتا ہے۔

آپ کے لئے یہ بھی بہت بہتر رہے گا کہ آپ کا باس آپ کے فیس بک فرینڈز میں شامل نہ ہو۔ ہم اپنی عام زندگی میں سوشل میڈیا پر کئی طرح کی باتیں پوسٹ کرسکتے ہیں اور اکثر لوگوں کو پتا نہیں ہوتا کہ ان کی کون سی باتیں ان کے باس کی طبیعت پر گراں گزررہی ہوتی ہیں، جس کا انہیں خمیازہ بھگتنا پڑتا ہے۔

جب کوئی پوسٹ کریں تو اپنی لوکیشن ٹیگ نہ کریں تاکہ آپ کی پرائیویسی محفوظ رہے۔ خصوصاً اس بات کو خفیہ رکھیں کہ آپ چھٹیوں پر کب جارہے ہیں، کہاں جارہے ہیں یا کتنے عرصے کے لئے جارہے ہیں۔ بعض جرائم پیشہ لوگ اس نوعیت کی معلومات پر نظر رکھتے ہیں تاکہ آپ کی غیر موجودگی میں آپ کے گھر پر واردات کرسکیں۔

سٹیٹس کی معلومات خفیہ رکھنا بھی آپ کے حق میں بہتر ہے۔ کوئی نیا تعلق استوار ہونے پر فیس بک پر اس کی خبر نشر کرنا یا کوئی تعلق ختم ہونے پر فیس بک پر اعلان کرنا جہاں آپ کے نفسیاتی اور سماجی مسائل میں اضافے کا سبب بنتا ہے وہیں آپکے مخالفین کو پیش قدمی کا موقع بھی فراہم کر دیتا ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس /سائنس اور ٹیکنالوجی

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...