’’ایک دن چودھری نثار نے مجھے فون کرکے بتایا کہ میڈیا والے تو۔۔۔‘‘ایک ایسی بات جسے جان کر صحافی غصے سے لال پیلے ہوجائیں گے 

’’ایک دن چودھری نثار نے مجھے فون کرکے بتایا کہ میڈیا والے تو۔۔۔‘‘ایک ایسی ...

لاہور(شاہدنذیر چودھری )چودھری نثارعلی خان ایک منجھے ہوئے اور اصول پسند سیاستدان کے طور پر مشہور ہیں،اہم ترین حکومتی عہدوں پرمتکمن رہنے کے باوجود وہ ایک عرصہ تک میڈیا سے بہت دور اور محتاط رہے ہیں اور انٹرویو دینے سے گریز کیا کرتے ہیں ۔2009ء میں جب وہ پیپلز پارٹی کی حکومت میں قائد حزب اختلاف تھے تو حکومت پر تنقید کرنے کے لئے بھی وہ ناپ تول کر بیان دینے کی کوشش کرتے تھے ۔ان دنوں میں فیملی میگزین (نوائے وقت ) میں اسسٹنٹ ایڈیٹر تھا ۔میں نے چودھری نثار علی خان کے انٹرویو کا پروگرام بنایا اورجب انہیں کال کرنے کی کوشش کی تو معلوم ہوا وہ موبائل پر بات نہیں کرتے ،اس وقت وہ میٹنگ میں تھے لہذا انکے پی ایس کو اپنانام اور فون نوٹ کرادیا ،ایک گھنٹے بعد چودھری نثار علی خان کا لینڈ لائن پر فون آگیا۔ انہوں نے اپنا نام بتاتے ہوئے مجھ سے کہا کہ آپ کا فون آیا تھا ،حکم کیجئے ۔ میں نے مدعا بیان کیا کہ آپ کا تفصیلی انٹرویو کرنا ہے تو کہنے لگے کہ بھائی ایک ہزار بار ملاقات کے لئے تشریف لائیں لیکن میں انٹرویو دینے سے معذرت کروں گا ۔کوئی اور خدمت ہے تو بتائیں ،یہ بات انہوں نے دو تین بار کہی۔مجھے ان سے انٹرویو کے سوا کوئی اور کام نہیں تھا لہذا انٹرویو کے لئے اصرار کیا اور اس گریز کرنے کی وجہ پوچھی تو کہنے لگے کہ میڈیا والے تروڑ مڑوڑ کر گفتگو شائع کرتے ہیں جس پر مجھے کوفت ہوتی ہے ۔یہ انٹرویو میرے گلے پڑجاتے ہیں کیونکہ مجھ سے جھوٹ نہیں بولا جاتا اور ہر بات بتائی نہیں جاسکتی ۔جو بات میں کہتا نہیں وہ چھاپ دیتے ہیں اس لئے میں نے عہد کیا ہوا ہے کہ کسی کو انٹرویو نہیں دوں گا ۔ لیکن بعد میں الیکٹرانک میڈیا کی بھرمار ہوئی تولگتا تھا چودھری نثار علی خان بھی دوسرے سیاستدانوں کی طرح سیاسی پروگراموں اور انٹرویوز کے لئے مجبور ہوجائیں گے ۔لیکن انہوں نے اپنی احتیاط کا دامن نہیں چھوڑا ۔اب بھی جب کوئی پریس کانفرنس کرتے ہیں تو اپنے ہر بیانئے کی وضاحت کرتے ہوئے ہی نظر آتے ہیں کہ انہوں نے یہ نہیں کہا تھا بلکہ ان کی بات کا مطلب اورتھا جسے تروڑمڑوڑدیا گیا ہے اوراس سے ابہام پیدا ہوگئے ہیں۔

چودھری نثار علی خان کے قریبی ساتھیوں کا بھی یہی کہنا ہے کہ وہ سیاست میں ملمع کاری اور جھوٹ سے گریز کرتے اور میڈیا سے بات چیت میں بہت ہی محتاط ہیں ۔پاکستان کی سیاست میں میڈیا سے دوری کوسیاسی موت سمجھا جاتا ہے اور ہر جماعت کے علاوہ اب سیاستدانوں کا اپنا میڈیا سیل بھی کام کررہا ہوتا ہے لیکن حیران کن بات ہے کہ چودھری نثار علی خان کو اسکی احتیاج نہیں ،میڈیا سے سخت نالاں ہونے کے باوجود سیاسی طور پر زندہ رہنے کے لئے اپنی وضع پر قائم ہیں ۔

مزید : علاقائی /پنجاب /لاہور

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...