بیرون ملک قید پاکستانی کیس، ڈپٹی سیکرٹری داخلہ کی لاعلمی ،ہائی کورٹ نے وزارت خارجہ کو امدادی اقدامات کاحکم دے دیا

بیرون ملک قید پاکستانی کیس، ڈپٹی سیکرٹری داخلہ کی لاعلمی ،ہائی کورٹ نے وزارت ...
بیرون ملک قید پاکستانی کیس، ڈپٹی سیکرٹری داخلہ کی لاعلمی ،ہائی کورٹ نے وزارت خارجہ کو امدادی اقدامات کاحکم دے دیا

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

لاہور(نامہ نگارخصوصی )لاہور ہائی کورٹ نے بیرون ملک قید تمام پاکستانیوں کی قانونی امداد کے لئے کونسلرز رسائی کے لئے اقدامات کا حکم دے دیا ۔

مسٹر جسٹس فرخ عرفان خان نے وزارت خارجہ کو حکم دیا ہے کہ ہرایک پاکستانی کے لئے کونسلرز رسائی کو یقینی بنایا جائے اور اس بابت آئندہ تاریخ سماعت پر وزارت خارجہ کا ذمہ دار افسر عدالت میں پیش ہوکر تفصیلی رپورٹ پیش کرے ۔فاضل جج نے وزارت خارجہ کو مزید حکم دیا ہے کہ بیرون ملک قید پاکستانیوں کے کوائف اور تعداد کے حوالے سے مفصل رپورٹ پیش کی جائے ،عدالت نے ڈپٹی اٹارنی جنرل کو حکم دیا کہ وہ وزارت خارجہ کے متعلقہ ڈیسک انچارج سے رابطہ کرکے اس رپورٹ کی تیاری اور15دن میں اسے عدالت میں پیش کرنے کو یقینی بنائیں۔عدالت نے کہا کہ جس کسی ملک میں بھی کوئی پاکستانی قید ہے اس کے بارے میں رپورٹ پیش کی جائے ۔دوران سماعت وزارت داخلہ کے ڈپٹی سیکرٹری مرزاخالد محمود کی طر ف سے عدالت کو ناقص معلومات فراہم کی گئیں۔ڈپٹی سیکرٹری نے عدالت کو بتایا کہ 2012ءسے دیگر ممالک کے ساتھ قیدیوں کے تبادلے پر پابندی عائد ہے ، ڈپٹی اٹارنی جنرل میاں عرفان اکرم نے ان کی لاعلمی کی نشاندہی کی اورعدالت کو بتایا کہ فروری2018ءمیں سپریم کورٹ کے حکم کی روشنی میں قیدیوںکے تبادلے پر پابندی ختم کی جاچکی ہے ۔عدالت نے آئندہ تاریخ سماعت پر وزارت خارجہ کے ذمہ دار افسر کو بھی پیش ہونے کی ہدایت کی ہے ،اس کیس کی مزید سماعت 30اپریل کو ہوگی ۔عدالت نے یہ احکامات ردا قاضی نامی خاتون کی درخواست پر جاری کئے ،درخواست میں بیرون ملک قید پاکستانیوں کی وطن واپسی کے لئے اقدامات کی استدعا کی گئی ہے ۔

مزید : علاقائی /پنجاب /لاہور