کوہاٹ ، بلی ٹنگ مال مویشی منڈی پر مقامی ناظمین کا قبضہ

کوہاٹ ، بلی ٹنگ مال مویشی منڈی پر مقامی ناظمین کا قبضہ

  

کوھاٹ (بیورو رپورٹ) بلی ٹنگ مال مویشی منڈی پر مقامی ناظمین کا قبضہ‘ ٹی ایم اے اہلکاروں کو منڈی سے بھگا دیا کئی دہائیوں سے ٹی ایم اے ٹیکس تو لے رہی ہے مگر بلی ٹنگ کی ترقی پر ایک پیسہ بھی خرچ نہ ہو سکا‘ ان خیالات کا اظہار ضلعی کونسلر بلی ٹنگ ملک فہیم‘ تحصیل کونسلر محمد اعجاز‘ ویلج ناظم عصمت اللہ وغیرہ نے میڈیا نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کیا ان کا کہنا تھا کہ گزشتہ تین سالوں سے ٹی ایم او سمیت تحصیل ناظم کو بار بار درخواستیں دے رہے تھے کہ بلی ٹنگ کے ساتھ ہونے والی زیادتی کا نوٹس لیں کیوں کہ بلی ٹنگ سے نہ صرف مال مویشی منڈی سے لاکھوں روپے ماہانہ کمائے جا رہے ہیں تو دوسری جانب ایک سال تک سوزوکی سٹینڈ سے بھی رقم وصول کی گئی مگر اس کے باوجود نہ تو ہماری درخواستوں اور فریادوں پر کوئی عمل ہو سکا اور نہ ہی بلی ٹنگ میں کوئی ترقیاتی کام ہوا نہ صفائی کا کوئی بندوبست کیا گیا اور نہ سٹریٹ لائٹ لگائی گئی آج ہم اپنے حق کے لیے اکھٹے ہوئے ہیں ٹی ایم اے کی جانب سے مال مویشی منڈی میں لوٹ مار کا بازار گرم تھا 75 فیصد وصولی ہوائی ہو رہی تھی اور 25 فیصد ٹی ایم اے کو جا رہا تھا مگر افسوس کہ آج تک پانچ ہزار کا کام نہیں کیا ملک فہیم کا کہنا تھا کہ 1980 سے ٹی ایم اے ہمارے وسائل پر قابض ہے انہوں نے اندھیر نگری مچا رکھی تھی اپنی مرضی کی رقم وصول کی جا رہی تھی ایک شہر ناپرسان بنا رکھا تھا اب ہم خود یہ رقم وصول کریں گے جو کہ بلی ٹنگ کی صفائی‘ گلی کوچوں کی تعمیر وغیرہ پر خرچ ہو گی اور یہ رقم قوم کی امانت ہو گی دوسری جانب ٹی ایم او کوھاٹ نے کار سرکار میں مداخلت کرنے پر ضلعی کونسلر ملک فہیم‘ تحصیل کونسلر محمد اعجاز‘ ویلج ناظم عصمت اللہ‘ نائب ناظم بلی ٹنگ عنایت اللہ اور دیگر نامعلوم افراد کے خلاف تھانہ بلی ٹنگ میں FIR درج کرنے کے لیے درخواست جمع کروا دی ہے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -