کچے میں آپریشن فلاپ 40سے زائد ڈاکو سکیورٹی اداروں کا حصارتوڑ کر فرار ،خالی ٹھکانے نذر آتش

کچے میں آپریشن فلاپ 40سے زائد ڈاکو سکیورٹی اداروں کا حصارتوڑ کر فرار ،خالی ...

  

راجن پور‘ رحیم یار خان ‘ صادق آباد(بیورو رپورٹ ‘ ڈسٹرکٹ رپورٹر ‘ نامہ نگار ‘ تحصیل رپورٹر ) دریائی کچے کے خطرناک جرائم پیشہ گروہوں کے سرغنہ غلام رسول عرف چھوٹو بکرانی کی باقیات بابا لونگ لٹھا نی اور لنڈ گینگ کے خلاف راجن پور ،رحیم یار خان پولیس کا مشترکہ آپریشن ایک بار پھر ناکام ہوگیا ، پولیس کاآپریشن دوسرے روز جاری تھا وقفہ وقفہ سے فائر نگ بھی کی گئی مگر جرائم پیشہ چالیس رکنی گروہ پولیس حصار سے نکلنے میں کامیاب ہوگیا پولیس کی (بقیہ نمبر41صفحہ7پر )

ٹیمیں دریائی کچہ کراچی میں داخل ہوئیں تو ملزمان کے ٹھکانے خالی پائے جنہیں پولیس نے آگ لگا کرمسمار کردیا ڈی پی او راجن پور ہارون رشید نے میڈیا کے لئے ویڈیو پیغام جاری کیا جس میں اس عزم کااظہار کیا کہ دریائی کچے میں جرائم پیشہ گروہوں کاہرحال میں مکمل خاتمہ کرکے تحصیل روجہان کے اس دریائی کچے کے علاقے میں مکمل امن قائم کریں گے واضح رہے کہ سی پیک راہداری منصوبے کی کامیا بی اور دریائی کچے میں امن کے لئے پولیس نے رینجرز کے جوانوں کے ہمراہ دریائی کچہ کراچی میں جرائم پیشہ گروہوں جن کی سربراہی خطرناک جرائم پیشہ بابا لونگ لٹھا نی دیگر شامل ہیں کی دریائی کچے میں موجود ہیں جس پر یہ آپریشن شروع کیا گیا آپریشن کے پہلے روز دونوں اطراف سے فائرنگ کاتبادلہ ہوا دوسرے روز پولیس کی ٹیمیں فائر نگ کرتی رہیں مگر جرائم پیشہ گروہوں کی طرف سے خاموشی دکھائی دی جس پر پولیس کی ٹیموں نے پیش قدمی کی اور دریائی جزیرے کچہ کراچی میں داخل ہوگئی جہاں پہنچ کر پتہ چلا کہ ڈاکو اپنی پناہ گاہیں چھوڑ کر پولیس حصار سے رات کی تاریکی میں نکلنے میں کامیاب ہوگئے جس پر پولیس نے اُن کی پناہ گاہوں کو مسمار کرتے ہو ئے آگ لگادی ڈی پی او ہارون رشید نے میڈیا کیلئے ویڈیو پیغام جاری کیا کہ جرائم پیشہ گروہوں کے ساتھ مقابلہ جاری ہے اور انہیں ہر حال میں ڈھونڈ نکالیں گے اور قانون کے کٹہرے میں لا کھڑا کریں گے ۔ادھر پولیس نے ڈاکوؤں کی کمین گاہ میں کیمپ قائم کر لیا۔ کچہ میں ڈاکوؤں سے فائرنگ کا تبادلہ کامیابی سے تعاقب جاری۔ کچہ آپریشن دوسرے روز میں داخل ہو گیا آپریشن میں رحیم یارخان اور راجن پور کی پولیس حصہ لے رہی ہے جس کی قیادت ڈی پی او رحیم یارخان عمر سلامت اور ڈی پی او راجن پور ہارون رشید کر رہے ہیں جبکہ ان کی قیادت میں اے ایس پی صادق آباد ڈاکٹر حفیظ الرحمن بگٹی ، ایس ڈی پی او روجھان ڈی ایس پی آصف رشید اور دونوں سرکلز کے ایس ایچ اوز اور جوانوں کے علاوہ ایلیٹ فورس اور دونوں اضلاع کے افسران وجوان بھی ڈاکوؤں کے خلاف برسرے پیکار ہیں۔ آپریشن کا آغاز ضلع رحیم یارخان کے تھانہ بھونگ کی حدود سے کیا گیا جس میں پولیس نے دو دن کے دوران راستے میں آنے والی رکاوٹوں ، ڈاکوؤں کی فائرنگ کا جواں مردی سے مقابلہ کیا اور کامیابیاں حاصل کرتے ہوئے ، گڑی خیر محمد جھک سے ہوتے ہوئے مقابلہ کے بعد عمر فاروق مزاری کے علاقہ میں بیس کیمپ قائم کرلیا اور مزید پیش قدمی کرتے ہوئے ڈاکوؤں کے سب سے بڑے جتھے لٹھانی گینگ کی کچہ کراچی میں واقع کمین گاہ کا محاصرہ کیا جہاں پر پولیس کو مزاحمت کا سامانا کرنا پڑا لیکن پولیس نے پیشہ ورانہ مہارت اور حکمت عملی کے ساتھ لٹھانی گینگ کو پسپا ہونے پر مجبور کر دیا۔ اور لٹھانی ڈاکو پولیس کی یلگار کی تاب نہ لاتے ہوئے کمین گاہ چھوڑ کر فرار ہونے پر مجبور ہوگئے جس پر پولیس نے کمین گاہ پر قبضہ کر کے کچہ کراچی میں ملک وزیر کے نام سے پولیس کمپ قائم کر کے علاقہ کی سکیورٹی سخت کر دی۔ جبکہ لٹھانی ڈاکوؤں کا تعاقب بھی جاری رکھے ہوئے ہے۔ آپریشن کے دوران سخت فائرنگ کے تبادلے میں پولیس کی تین موبائلز کو جزوی نقصان پہنچنے کی اطلاعات بھی ہیں۔ تاہم اس موقع پر ڈی پی او عمر سلامت نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا پولیس افسران اور جوانوں کا مورال بلند ہے اور پولیس آپریشن کامیابی سے جاری ہے۔ پولیس فورس کی آپریشن میں ضروریات پوری کی جا رہی ہیں اور ہر طرح سے پوری پالاننگ کے ساتھ میدان میں ہیں۔ اس موقع پر ترجمان پولیس نے کہا کہ آپریشن سے متعلق ابہام اور منفی تبصرون سے گریز کیا جائے اور پولیس فورس کا مورال بلند کرنے کے لیے ہر میڈیا خصوصاً سوشل میڈیا پر مثبت رویہ اپنائیں یہ آپ کی پولیس ہے اور آپ کے لیے جان ہتھیلی پر رکھ کر مسلح اور خطرناک ڈاکوؤں کے خلاف کارروائی کر رہی ہے جس کا فائدہ اہم علاقہ اور دونوں اضلاع کی عوام کو پہنچے گا۔

کچے میں آپریشن

مزید :

ملتان صفحہ آخر -