کرپٹ افراد کا بلاتفریق احتساب ہونا چاہیے ‘ ڈاکٹر وسیم اختر

کرپٹ افراد کا بلاتفریق احتساب ہونا چاہیے ‘ ڈاکٹر وسیم اختر

  

ملتان (سٹی رپورٹر)امیرجماعت اسلامی جنوبی پنجاب و صوبائی پارلیمانی لیڈر ڈاکٹر سید وسیم اختر نے کہا ہے کہ عوام کو درپیش مسائل سے (بقیہ نمبر21صفحہ12پر )

نجات کے لیے تمام سیاسی جماعتوں کے درمیان روابط قائم ہونے چاہئیں۔ ملکی معاشی صورتحال دن بدن گھمبیر ہوتی چلی جارہی ہے۔ ڈالر کی مسلسل اڑان نے عوامی مشکلات میں مزید اضافہ کردیا ہے۔ پی ٹی آئی حکومت کے آٹھ ماہ میں 34ارب کا نیا قرضہ حاصل کیاگیا ہے ۔ جن افراد نے تبدیلی کے دعویداروں کو ووٹ دیا تھا، آج وہ لوگ بھی سراپا احتجاج ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کی تاریخ میں پہلی مرتبہ فارماسیوئیٹکل کمپنیوں کو45ہزار ادویات کی قیمتوں میں 15فیصد تک بڑھانے کی اجازت لمحہ فکریہ ہے۔ جب کہ ان میں سے جان بچانے والی 463ادویات کی قیمتوں میں 200فیصد تک اضافہ ہوگیا ہے۔ ادویات کی قیمتوں میں ہو شر با اضافے نے عوام سے صحت کی بنیادی سہولت بھی چھین لی ہے۔ یوں محسوس ہوتا ہے کہ جیسے حکمرانوں کے پاس عوام کی فلاح وبہبود کا کوئی ایجنڈا نہیں۔ وزراء کے بیانات عوام کی تشویش میں اضافے کا باعث بن رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ احتساب کا نعرہ لگانے والوں نے اسے متنازعہ بنادیا ہے۔ تمام کرپٹ افراد کا بلا تفریق محاسبہ ہونا چاہئے۔ جس کسی نے بھی کرپشن کے ذریعے پیسہ کمایا ہے وہ قومی مجرم ہے اور کسی قسم کی رعایت کا مستحق نہیں۔ کرپٹ افرادملک کو دیمک کی طرح چاٹ رہے ہیں۔ ایماندار قیادت ہی کرپشن کا خاتمہ کرسکتی ہے۔

وسیم اختر

مزید :

ملتان صفحہ آخر -