اسلام آباد شہر کی صفائی ،ہسپتالوں کا کوڑا اٹھانے کا ذمہ دار صرف ایک ٹھیکیدار ،سینیٹ کمیٹی میں انکشاف

اسلام آباد شہر کی صفائی ،ہسپتالوں کا کوڑا اٹھانے کا ذمہ دار صرف ایک ٹھیکیدار ...

  

اسلام آباد(آئی این پی)سینیٹ کی قائمہ کمیٹی موسمیاتی تبدیلی میں انکشاف ہوا ہے 18ویں ترمیم کے بعد اسلام آباد میں ماحولیات کے حوا لے سے کوئی بڑا منصوبہ شروع نہیں کیا گیا، وفاقی دارلحکومت کے تمام ہسپتالوں اور شہر بھر کاکوڑا اٹھانے کیلئے صرف ایک ٹھیکیدار کو ٹھیکہ دیا گیا ہے۔ کمیٹی نے برہمی کا اظہار کرتے ہوئے اس حوالے سے تمام تفصیلات جس میں ٹھیکیدار کتنا چارج کرتا ہے ، ہسپتالوں سے کتنا فضلہ پید ا ہوتا ہے اور وفاقی دارالحکومت کیلئے پبلک پرائیوٹ پارٹنر شپ کے ذریعے انسیلیٹر لگانے کیلئے کیا اقدامات کیے گئے ہیں آئندہ اجلاس میں طلب کر لیں۔کمیٹی کو آگاہ کیا گیا31 د سمبر تک اسلام آباد کو پلاسٹک فری شہر بنادیا جائیگا، تجو یز ہے کوڑا تلف کرنے کیلئے رہائشیوں سے چارج کیا جائے گا، گاڑیوں کے دھواں کو چیک کرنے کیلئے وزارت داخلہ کو خط لکھ دیا ،کیونکہ یہ دھواں فضائی آلودگی کا سبب بن رہا ہے، قا ئمہ کمیٹی نے ہدایت کی کہ اسلام آباد کو صاف ستھرا بنانے کیلئے پیمرا موثر تشہیر کرے ،پیر کوسینیٹ کی قائمہ کمیٹی موسمیاتی تبدیلی کا اجلاس چیئر پر سن سینیٹر ستارہ ایاز کی زیر صدار ت ہواجس میں ارکان کمیٹی کے علاوہ میئر اسلام آباد شیخ انصر عزیز ، ایڈیشنل سیکرٹری وزارت موسمی تغیرات ، ڈائریکٹر سنیٹیشن اور دیگر اعلیٰ حکام نے شرکت کی ۔چیئرپرسن کمیٹی سینیٹر ستارہ ایاز نے کہاوفاقی دارالحکومت اسلام آباد دنیا کے خوبصورت شہر وں میں سے ایک ہے،اسکو صاف ستھرا اور ماحول دوست بنا کر ملک کیلئے ماڈل بنایا جائے گا،ہسپتالوں کا فضلہ ٹھکانے لگانے کیلئے موثر اقد ا مات ضروری ہیں ، پمز ہسپتال میں نصب انسیلیٹر صحیح کام نہیں کر رہا،میئر شیخ انصر عزیز اور ڈائریکٹر صفائی (سنیٹیشن)نے کمیٹی کو بتایا اسلام آباد کے نالوں کی صفائی جاری ، کو ڑا دان ر کھ دیئے ،خلاف ورزی کرنے پر 40نوٹسز بھی جاری کیے گئے ہیں ۔ ایڈیشنل سیکرٹری وزارت موسمی تغیر ا ت نے کمیٹی بتایا کوڑا کرکٹ کو تلف کرنے کیلئے جلد انجینئرنگ سائیڈ کی طرف منتقل ہو جائیں گے ۔ فنڈز کی کمی کی وجہ سے مسائل کا سامنا ہے ،سینیٹر فیصل جاوید نے کہا فیصل مسجد ایک شاہکارہے مگر وہاں جتنی گندگی نظر آتی ہے اس کی مثال نہیں ملتی ۔ سی ڈی اے اور مسجد انتظامیہ ذمہ داری ایک دوسرے پر ڈالتے ہیں ۔ قائمہ کمیٹی نے چیئرمین سی ڈی اے کی کمیٹی اجلاس میں عدم شرکت پر سخت برہمی کا اظہار کرتے ہو ئے آئندہ اجلاس میں شرکت یقینی بنانے کی ہدایت کی ۔ چیئرپرسن کمیٹی نے کہا اسلام آباد کو پلاسٹک فری بنانے کیلئے اقدامات اٹھا ئے جا ر ہے ہیں ۔ چیئرمین سینیٹ اور ڈپٹی چیئرمین سینیٹ کے دفاتر میں پلاسٹک کااستعمال بند اور پارلیمنٹ کی کمیٹیوں کے اجلاس میں پلاسٹک کی پانی کی بوتلیں فراہم نہیں کی جاتیں ۔ کمیٹی کو اسلام آباد کوفضائی آلودگی سے پاک کرنے کیلئے اٹھائے گئے اقدامات پر بھی تفصیلی بریفنگ دی گئی اوربتایا گیا فروری2018 تک فضائی آلودگی بہت زیادہ تھی اب تمام سٹیل ملز و دیگر فیکٹریوں پر فلٹر لگا دیئے گئے ہیں، گرین انڈسٹری زون کا آغازہو چکا ،گرین صنعتی پروگرام جلد شروع ہو جائیگا۔ گزشتہ پانچ ماہ سے کسی بھی فیکٹری سے دھواں نظر نہیں آتا، سینیٹر محمد اسد علی خان جونیجو نے کہا کوڑے کی ری سائیکلنگ کیلئے کیا طریقہ کار اختیار کیا جاتا ہے اور کون سے پلانٹ لگائے گئے ہیں آئندہ اجلاس میں آگاہ کیا جائے ۔

سینیٹ کمیٹی

مزید :

صفحہ آخر -