بیرٹ ہڈسن یونیورسٹی نے حکومتی احکامات ہوا میں اڑا دیے

بیرٹ ہڈسن یونیورسٹی نے حکومتی احکامات ہوا میں اڑا دیے

  

کراچی (این این آئی)انڈسٹریل ایریا میں واقع بیرٹ ہڈ سن نامی نجی جامعہ نے سندھ حکومت کے لاک ڈان کی دھجیاں اڑا دیں اساتذہ اور اسٹاف کی زندگیاں دا پر لگاتے ہوئے نجی یونیورسٹی انتظامیہ نے ٹیچرز ٹرینگ کے پروگرام کا شیڈول جاری کر دیا.شیڈول کے مطابق یہ پروگرام جمعرات 9 اپریل کو یونیورسٹی میں منعقد کیا جائے گا جس میں 70 کے قریب سینئر اور جونیر اساتذہ سمیت دیگر اسٹاف کی شرکت یقینی بنائی جائے گی.ذرائع کے مطابق یونیورسٹی انتظامیہ نے ایچ ای سی کے احکامات کی کھلی خلاف ورزی کرتے ہوئے اپنے اسٹاف کو یونیورسٹی حاضر ہونے کے لئے ای میل کر دی.یونیورسٹی کے وائس چانسلر کے احکامات پر عمل درآمد کرتے ہوئے اسسٹنٹ رجسٹرار نے 9 اپریل بروز جمعرات تمام ٹیچنگ اور نان ٹیچنگ اسٹاف کو اپنی حاضری یقینی بنانے کے لئے ای میل کر دی جاری کر دی ای میل میں بزرگ اسٹاف کو بھی پابند کیا ہے کہ وہ یونیورسٹی میں اپنی حاضری یقینی بنائیں. اسٹاف ممبر نے اپنا نام خفیہ رکھنے کی شرط پر بتایا کہ جب یونیورسٹی انتظامیہ سے اس سلسلے میں رابطہ کر کے لاک ڈان کے حوالے سے سندھ حکومت کے احکامات سے متعلق یاد دہانی کروائی گئی تو جواب میں نوکری سے فراغت کا عندیہ دیا گیا. ان حالات میں نجی یونیورسٹی کا یہ مجرمانہ عمل نہ صرف وزیر اعلی سندھ کو منہ چڑا رہا ہے بلکہ خطرناک حد تک کئی افراد کو کرونا کا مریض بنا سکتا ہے. ذرائع کیمطابق بروز جمعرات نجی یونیورسٹی میں ٹیچر ٹریننگ کے سیشن کے تمام انتظامات مکمل کر لئے گئے ہیں مزید براں ٹیچرز اور اسٹاف کو فون کر کے زبردستی حاضری کے احکامات دیے جا چکے ہیں.شہر میں وبائی صورتحال میں ٹریننگ سیشن کے باعث کرونا کا پھیلا بہت بڑے پیمانے پر ہو سکتا ہے جس کے سدباب کے لئے سندھ حکومت فوری طور پر مداخلت کر کے یونیورسٹی انتظامیہ خاص طور پر یہ احکامات جاری کرنے والے یونیورسٹی کے وائس چانسلر کے خلاف سخت کارروائی عمل میں لائے تاکہ ٹیچرز اور دیگر اسٹاف کی زندگیاں بچائی جاسکیں

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -