کورونا کی اگلی منزل د یہی علاقے،مریضوں کی تعداد اچا نک بڑھنے کا خطرہ ہے کیونکہ ۔۔۔ ماہرین نے خبردار کردیا

کورونا کی اگلی منزل د یہی علاقے،مریضوں کی تعداد اچا نک بڑھنے کا خطرہ ہے ...
کورونا کی اگلی منزل د یہی علاقے،مریضوں کی تعداد اچا نک بڑھنے کا خطرہ ہے کیونکہ ۔۔۔ ماہرین نے خبردار کردیا

  

اسلام آباد (ویب ڈیسک) ماہرین نے خبر دار کیا ہے کہ دیہی علاقے موثر انفراسٹرکچر کی کمی کی وجہ سے شدید خطرے میں ہیں، کورونا کی اگلی منزل د یہی علاقے ہیں ،جس سے مریضوں کی تعداد میں اچا نک بڑا اضا فہ سامنے آنے کا خطرہ ہے۔ یونین کونسل سطح پرزرعی کارکنوں اور دیہی معیشت کے تحفظ کی ضرورت ہے،حکومت کورونا کے بحران کے دوران دیہی علاقوں میں غریب اور پسماندہ طبقات کو امداد فراہم کرنے میں ناکام رہی ہے۔

ایس ڈی پی آئی کے زیر اہتمام ، "کو رونا وائرس “بحران پر ری تھنکنگ ڈویلپمنٹ" کے موضوع پر آن لائن گفتگو کرتے ہو ئے ایس ڈی پی آئی کے ایگزیکٹو ڈائریکٹر ڈاکٹر عابد قیوم سلہری نے کہا کہ حکومت موجودہ بحران میں وزارت بین الصوبائی رابطہ اور مشترکہ مفادات کونسل کے آئینی فورم کو موثر طورپر استعمال نہیں کر رہی، نیشنل کمانڈ اینڈ کنٹرول اتھارٹی قومی سطح کے آپریشنل چیلنجوں پر قابو پانے میں مددگار ثابت ہوسکتی ہے لیکن ممکن ہے کہ وہ مرکز اور صوبوں کے مابین سیاسی اختلافات دور نہ کرسکے ، جس کا حل صرف سی سی آئی کے ذریعے ہی نکالا جاسکتا ہے۔

انہوں نے کورونا کے پھیلاﺅکو روکنے اورخوراک کی فراہمی کو یقینی بنانے کے لئے یونین کونسل کی سطح پرزرعی کارکنوں اور دیہی معیشت کے تحفظ کی ضرورت پر زور دیا۔کورونا کیخلاف وفاقی اور صوبائی حکومت کو ایک دوسرے کے ساتھ تعاون کرنا چاہئے اورسب کا ایک ہی صفحے پر ہونا ضروری ہے۔کنگس کالج لندن کے شعبہ جغرافیہ کے فیکلٹی ممبر ڈاکٹر دانش مصطفی نے کہا کہ حکومت مقامی حکومت اور لوگوں کوساتھ لے کر ڈیزاسٹر مینجمنٹ سے نمٹنے کا نقطہ نظر اپنائے۔ایس ڈی پی آئی کے جوائنٹ ایگزیکٹو ڈائریکٹر ڈاکٹر وقار احمد نےکہا کہ یہ ہماری اجتماعی ناکامی ہے کیوں کہ ہم ابھی تک کورونا کی وباءکے بحران کا اندازہ کرنے میں ناکام ہیں۔

مزید :

علاقائی -اسلام آباد -کورونا وائرس -