ایچ ای سی کی خودمختاری ختم، تمام فیصلے وزارت تعلیم کی منظوری سے مشروط: صدر نے آرڈ یننس کی منظوری دیدی 

ایچ ای سی کی خودمختاری ختم، تمام فیصلے وزارت تعلیم کی منظوری سے مشروط: صدر نے ...

  

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) ہائر ایجوکیشن کمیشن کی خود مختاری ختم کرتے ہوئے اس کے تمام فیصلے وزارت تعلیم کی منظوری سے مشروط کر دیئے گئے ہیں، چیئرمین کی تعیناتی دو سال جبکہ ممبران 4 سال کیلئے تعینات ہوگی۔صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے ہائیر ایجوکیشن کمیشن (ایچ ای سی) ترمیمی آرڈیننس 2021ء  کی منظوری دے دی ہے جس کا اطلاق 26 مارچ سے ہوگا۔ آرڈیننس کے تحت ہائیر ایجوکیشن کمیشن کی خود مختاری ختم کر دی گئی ہے۔ ایچ ای سی کے تمام فیصلے اب وزارت تعلیم کی منظوری سے مشروط ہونگے۔آرڈیننس کے مطابق چیئرمین ایچ ای سی کی تعیناتی 2 سال جبکہ ممبران کی تعیناتی 4 سال کیلئے ہوگی، تاہم چیئرمین اور ممبران مزید ایک ٹرم بھی لے سکیں گے۔خیال رہے کہ اسٹیبلشمنٹ ڈویڑن نے گزشتہ ماہ ڈاکٹر طارق بنوری کو چیئرمین ہائیر ایجوکیشن کمیشن کے عہدے سے اچانک ہٹا دیا تھا۔ نیب نے ایک خط کے ذریعے طارق بنوری سے غیر قانونی تقرریوں، اختیارات کے ناجائز استعمال، بد انتظامی اور بدعنوانیوں کے الزامات پر جواب طلب کر رکھا ہے۔طارق بنوری کو سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے مئی 2018ء میں تعینات کیا تھا۔ ان کی 4 سالہ مدت ملازمت مئی 2022ء  کو پوری ہونا تھی۔

ایچ ای سی

مزید :

صفحہ آخر -