بھائی نے بہن، مخالفین نے2افراد کو موت کے گھاٹ اتار دیا

بھائی نے بہن، مخالفین نے2افراد کو موت کے گھاٹ اتار دیا

  

ملتان، قادر پور راں، جام پور،گڑھا موڑ (وقائع نگار، نمائندہ پاکستان، نامہ نگار)خاتون سمیت 2افراد کو موت کے گھاٹ اتار دیا گیا تفصیل کے مطابق قادرپورراں کے علاقے بستی لعل عیسن میں زاتی دشمنی کی بنا پر 12 افراد نے 23 سالہ نوجوان کو فارنگ کر کے قتل کردیا ورثا کا نعش کو رانواں بای پاس پر رکھ کر ملزمان اور مقامی پولیس کے خلاف روڈ بند کرکے شدید احتجاج ملزمان گرفتار نہ ہوئے پولیس مصروف (بقیہ نمبر2صفحہ6پر)

تفتیش تفصیل کے مطابق تھانہ قادرپورراں کے نواحی علاقے بستی لعل عیسن بنگل والہ میں 23 سالہ عاصم عرف مہنگا بلوچ نے موٹر سایکل الیکٹریشن کی دوکان بنای ہوی ہے اطلاعات کے مطابق  گزشتہ روز محسن، احسن خان، عرفان خان، بلال خان، رمضان، شان خان،علی شیر، طاہر عباس اور 4 نامعلوم افراد اسلحہ کلہاڑیوں اور سوٹوں سے مسلح ہوکر عاصم بلوچ کی دوکان پر  آئے اور سوٹوں اور کلہاڑیوں کے وار کیے اور پھر فار مارے اور  عاصم کو قتل کر دیا جس کے بعد عاصم کے ورثا، لواحقین اور اہل علاقہ نے اس واقعہ کے خلاف رانواں بای پاس ملتان خانیوال جی ٹی روڈ پر مقتول کی نعش کو رکھ کر ملزمان اور تھانہ قادرپورراں پولیس کی بے حسی کے خلاف شدید احتجاج کیا جس کی وجہ سے کی گھنٹے تک ٹریفک مکمل طور پر بند رہی اطلاع پر ایس پی صدر را نعیم موقع پر پہنچ گئے اور مقتول کے ورٹا سے مزاکرات کیے لواحقین نے ایس پی صدر کو بتایا کہ ایک واقعہ سے ایک روز قبل بھی شام کے وقت مزکورہ ملزمان عاصم کی دوکان پر آئے لیکن عاصم دوکان پر موجود نہیں تھا اس کا بھای موجود تھا اس کو زدو کو کیا اور دوکان سے سامان وغیرہ بھی اٹھا کر لے گئے اس واقعہ کی اطلاع رانواں پولیس کو دی گ لیکن پولیس نے ملزمان کے خلاف کوی ایکشن نہ لیا اور ٹس سے مس نہ ہوی اگر پولیس بروقت ایکشن لے لیتی اور ملزمان کو اس وقت گرفتار کر لیا جاتا تو ہوسکتا ہے کہ یہ قتل کا وقوعہ پیش نہ آتا جس پر ایس پی صدر نے مظاہرین کو یقین دہانی کروای کہ آپ کے ساتھ مکمل انصاف ہوگا مزاکرات کے بعد احتجاج ختم کرکے روڈ کو ٹریفک کیلیے کھول دیا گیا جبکہ نعش کو پوسٹ مارٹم کیلیے رورل ہیلتھ سنٹر قادرپورراں لایا گیا جبکہ تھانہ قادرپورراں پولیس نے 8 نامزد اور 4 نامعلوم ملزمان کے خلاف مقدمہ درج کرکے تفتیش شروع کردی ہے اور مصروف تفتیش ہے تاہم پولیس تا حال ملزمان کو گرفتار نہیں کرسکی ہے کوٹلہ دیوان کے علاقہ قادو والا میں مظفر گڑھ کے رہاشی مزدو صابر حسین کو رشتہ کے تنازعہ پر ملزمان نے فائرنگ کرکے قتل کر دیا۔ اطلاع ملتے ہی ڈی ایس پی او رایس ایچ او موقع پر پہنچ کرکے لاش کو پوسٹ مارٹم کے لیے ٹی ایچ کیو ہسپتال جام پور شفٹ کرکے چھ ملزمان کے خلاف مقتول کی والد ہ کی مدعیت میں قتل کا مقدمہ درج کرکے مزید کاروائی شروع کر دی۔ تفصیل کے مطابق مظفر گڑھ کے رہاشی  صابر حسین سولہ سالہ عمر نے والدین کے ہمراہ  محنت مزدوری کے لیے کوٹلہ دیوان کے نزدیک قادوالا میں رہاش اختیاکر رکھی تھی۔  ملزمان نے رات کے وقت گھر میں گھس کرکے   سوئے ہوئے پر اندھا دھند فائرنگ کرکے ابدی نیند سلا دیا۔ اطلاع ملتے ہی ڈی ایس پی پرویز احمد احمدانی او ر ایس ایچ او اسحاق جان موقع پر پہنچ گئے۔ اور لاش کو قبضہ میں لے کرکے پوسٹ مارٹم کے لیے ٹی ایچ کیو ہسپتال جام پور شفٹ کر دیا۔ پولیس نے پوسٹ مارٹم کے بعد مقتول کی لاش کوورثاء کے حوالہ کرتے ہوئے مقتول کی  والدہ ذرینہ بی بی زوجہ یوسف قوم کھرکھر سکنہ مظفر گڑھ کی مدعیت میں چھ ملزمان   ٖفقیر ولد خلیل احمد۔ عظیم ولد احمد۔ رفیق احمد۔ نجف علی۔ کاکا ولد انور خان۔ مقبول احمد کے خلاف زیر دفعہ تین سو دو مقدمہ درج کرکے مزید کاروائی شروع کر دی ہے۔ گھریلو ناچاقی بھائی نے 25سالہ بہن کو فائرنگ کر کے قتل کر دیا، مقتولہ دو بچوں کی ماں تھی۔ تفصیل کے مطابق چک نمبر98ڈبلیوبی کے رہائشی محمد حنیف کی بیٹی سونیاں طلاق لیکر والدین کے گھر رہ رہی تھی جس پر بہن اور بھائی کے درمیان اکثر لڑائی جھگڑا رہتا تھا جس پر بھائی محمد وحید نے فائرنگ کر کے پچیس سالہ بہن سونیاں کو موت کے گھاٹ اتار دیا اور فرار ہونے میں کامیاب ہو گیا۔ مقتولہ دو بچوں کی ماں تھی پولیس چوکی گڑھاموڑ تھانہ مترو ایس ایچ او عمران صدیقی سیکورٹی آفیسر مظہر حسین ٹانوری، چوہدری عبدالمجید، محمد عمران، غلام مصطفی نے موقع پر پہنچ کر لاش تحویل میں لیکر پوسٹمارٹم کیلئے آر ایچ سی گڑھاموڑ بھیج دی اور کاروائی شروع کر دی ہے۔ ڈی ایس پی میلسی مہر وسیم سیال موقع پہنچ گئے اورصحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ملزم کو جلد گرفتار کر لیں گے۔

قتل

مزید :

ملتان صفحہ آخر -