ایچ ای سی آرڈیننس کی مذمت کرتے ہیں، شیری رحمن 

ایچ ای سی آرڈیننس کی مذمت کرتے ہیں، شیری رحمن 

  

 اسلام آباد (این این آئی) پاکستان پیپلز پارٹی کی نائب صدر سینیٹر شیری رحمان نے کہا ہے کہ ایچ ای سی آرڈیننس اور اس کے پیچھے چھپے مقاصد کی مذمت کرتے ہیں۔ اپنے بیان میں شیری رحمن نے کہاکہ حکومت نے ایچ ای سی کی خودمختاری ختم کرنے کا فیصلہ کس مقصد کیلئے کیا ہے؟ ایچ ای سی کو وزارت تعلیم کے ماتحت کرنا ہائر ایجوکیشن کے خلاف سازش ہے،تباہی سرکار تعلیم کو تو بخش دے۔ انہوں نے کہاکہ آپ تعلیم کو ایڈہاک بنیاد پر آرڈیننس سے نہیں چلا سکتے، آپ کی نیت ٹھیک ہے تو بل لائیں، قانون سازی کریں۔ انہوں نے کہاکہ ایچ ای سی آرڈیننس کو سینیٹ میں مسترد کرے گے، ایک تسلیم شدہ ادارے کو وفاقی حکومت کے ماتحت کرنا تعلیم دشمنی ہے۔ انہوں نے کہاکہ نئے ادارے بنانے کے بجائے پرانے اداروں پر قبضہ کیا جا رہا ہے، سندھ کے ہسپتالوں سے لیکر ایچ ای سی تک قبضہ سرکار کو ناکامی نصیب ہوگی،حکومت ایک خودمختار تعلیمی ادارے کو تباہ نہ کرے۔ شیری رحمن نے کہاکہ ایک سروے کے مطابق 73 فیصد پاکستانی سمجھتے ہیں کہ ملکی معاشی سمت غلط ہے، 70فیصد پاکستانی ملکی حالات سے پریشان ہیں۔ انہوں نے کہاکہ 64 فیصد نے ملک کی موجودہ معاشی صورتحال کو خراب کہا ہے، صرف کابینہ میں بیٹھے لوگوں کو لگتا ملک صحیح سمت میں جا رہا ہے۔ انہوں نے کہاکہ تباہی سرکار کی عوام میں مقبولیت زمین بوس ہو چکی ہے

شیری رحمن 

مزید :

علاقائی -