پٹرول ایجنسی والے پر تشدد کا معاملہ،16روز  گزرنے کے باوجود پولیس نے غلام مصطفی  کھر کے بیٹے یزدانی کھر کے خلاف مقدمہ  درج نہ کیا، متاثرین کا دھرنے کا اعلان

پٹرول ایجنسی والے پر تشدد کا معاملہ،16روز  گزرنے کے باوجود پولیس نے غلام ...

  

 کوٹ ادو(تحصیل رپورٹر)بگڑے رئیس گورنر زادے کامفت(بقیہ نمبر26صفحہ6پر)

 پٹرول نہ ڈالنے پر پٹرول ایجنسی والے پر تشدد معاملہ،سابق گورنر کے بیٹے کے خلاف تھانہ میں درخواست دینے کے باوجود پولیس کی روایتی بے حسی،16روزگزرگئے پولیس نے کوئی کارروائی نہ کی،متاثرہ پریس کلب کوٹ ادو پہنچ گیا، بااثرشخصیات ہونے پر پولیس کارروائی نہیں کر رہی، پولیس نے اگر مقدمہ درج نہ کیا تو ڈی پی او آفس کے سامنے دھرنا دیں گے،اس بارے تفصیل کے مطابق موضع کھر غربی کے رہائشی حاجی دلدار حسین لدھانی جس کیاکلوتے  بیٹے کو تقریبا 6سال پہلے سابق گورنر ملا غلام مصطفی کھر کے بیٹے سابق ایم پی اے ملک بلال کھرنیفائر مار کر قتل کر دیا تھا اور جس کے خلاف حاجی دلدارلدھانی نے قتل کا مقدمہ بھی درج کرا رکھا ہے جبکہ بلال کھر عرصہ دراز سے مفرور عدالتی اشتہاری ہے، اس حوالے سے حاجی دلدار حسین لدھانی نے پریس کلب کوٹ ادو میں بتایا کہ اس نے چوک کہتر میں پٹرول ڈیزل کی ایجنسی بنا رکھی ہے، 24مارچ کی شب اس کا کزن مجاہدحسین ایجنسی پر موجود تھا جب کہ چوکیدار ذوالفقار کھربھی ڈیوٹی پر وہیں تھا کہ اسی دوران سابق گورنر و سابق وزیر اعلی پنجاب ملک غلام مصطفی کھر کا صاحبزادہ ملک یزدانی کر اپنے 2ساتھیوں کے ہمراہ اپنی سفید کار نمبری 402 پر آیا اور کار میں ایک ہزارکا پیٹرول ڈالنے کا کہا اور زبردستی اپنی گاڑی میں 3ہزار کا پٹرول ڈال کر پیسے دیے بغیر جانے لگا،مجاہد نے رقم کا تقاضہ کیا تو کار سے باہرنکل کر اسے مارنا شروع کر دیا،پسٹل نکال کر اسے بٹ مارے، سنگین نتائج کی دھمکیاں دیں اور پھر فحش گالیاں دیتا ہوافرار ہوگیا، اس بارے انہوں نے آر پی او ڈیرہ غازی خان، ایس ایچ او تھانہ  صدرکو تمام صورتحال سے آگاہ کیا،پولیس موقع پر بھی آئی مگر 16 روز گزرنے کے باوجود وہ تھانوں کے چکر کاٹ رہے ہیں اورپولیس بااثرشخصیات ہونے کی وجہ سے ان کے خلاف کارروائی نہیں کر رہی، حاجی دلدار حسین لدھانی نے کہا کہ سابق گورنر کے بیٹے ملک بلال کھرنے نا حق اس کے اکلوتے بیٹے جو کہ 5 بہنوں کا اکلوتا بھائی تھا کو فائرنگ کر کے ناحق قتل کیا تھا، پولیس پچھلے6 سالوں سے اسے گرفتار کرنے میں بھی ناکام ہیم کھر خاندان کافی عرصہ سے اس پر صلح کے لیے دباؤ ڈال رہا ہے اور اس مقصد کے لیے کئی پیغامات بھجواتا ہے مکبھی دھمکیاں دیتا ہے اور کبھی غیر قانونی اس قسم کی حرکات کرتے ہیں م حاجی دلدار حسین نے کہا کہ ایک تو پولیس اس کے بیٹے کے قاتل گرفتار نہیں کر رہی اور دوسرا انہیں تحفظ دینے اور ان کے ساتھ وارداتیں کرنے والوں کے خلاف کارروائی نہیں کرتی، انہوں نے آئی جی جنوبی پنجاب، آر پی او ڈیرہ غازی خان، ڈی پی اومظفرگڑھ سے مطالبہ کیا کہ مصطفی کھر کے بیٹے غلام یزدانی کھر کے خلاف فوری کاروائی کی جائے بصورت دیگر وہ ڈی پی او آفس کے سامنے احتجاجی دھرنا دے گا۔

اعلان

مزید :

ملتان صفحہ آخر -