پرچون دکانداروں کا چینی 100روپے کلو سے کم پر فروخت کرنے سے انکار

  پرچون دکانداروں کا چینی 100روپے کلو سے کم پر فروخت کرنے سے انکار

  

لاہور (لیڈی رپورٹر) ماہ رمضان میں یوٹیلٹی سٹورز کے ذریعے حکومت شہریوں کو چینی، گھی، آٹا دالیں و دیگر اشیائے ضروریہ سستے داموں فر ا ہم کرنے کی یقین دہانیاں کروارہی ہے لیکن دوسری جا نب عدالتی احکامات کے باوجود لاہور میں دکاندار کسی صورت 100 روپے فی کلو سے کم نرخ پر چینی بیچنے کیلئے تیارنہیں،جبکہ شہری ایک مرتبہ پھر منافع خوروں کے ہا تھوں لٹنے پر مجبور ہونگے۔تفصیلا ت کے مطا بق شہر بھر میں چینی کے نرخ قا بو میں نہیں آسکے جس کے با عث چینی پرچون میں 100 روپے فی کلو فروخت ہو رہی ہے۔اس ضمن میں دکانداروں محمد ر مضا ن، بلا ل، شاید کا کہنا تھا وہ خود چینی مہنگے داموں خریدنے پر مجبور ہیں، سرکاری نرخ پر کیسے فروخت کریں، اگر زیادہ سختی یا جرمانے کیے گئے تو وہ چینی کا بائیکا ٹ کردینگے، جبکہ شہریوں نثار ا حمد، دلشا د، حسنین، اقاء بی بی و یگر کا کہنا تھا دکانداراپنی مرضی سے نرخ وصول کرتے ہیں، شکایت سننے والا کوئی نہیں، حکومت نے بازار بند کروانے کا اعلان کررکھا ہے لیکن دکانیں معمول کے مطابق کھلی رہتی ہیں، آدھے شٹر نیچے اور گاہک اندر ہوتے ہیں لیکن پولیس اپنا حصہ وصول کرکے خاموش ہوجاتی ہے، اگر کوئی چھاپہ مار کارر و ا ئی کی جائے تو پہلے سے موجود مخبر ہی ا طلا ع کردیتے ہیں جس کے بعد دکاندار شٹر پھینک کر غائب ہوجاتے ہیں۔ حکو مت کو صرف آڈر جا ری کر نے آتے ہیں عملدرا ٓ مد کا کو ئی اصو ل نہیں۔ حکو مت چینی کے نر خ کنٹرول کر نے کیلئے جب تک عملی اقدا ما ت نہیں کر یگی تب تک قیمتوں پر قا بو پا نا ممکن ہے۔

دکاندارانکار

مزید :

صفحہ اول -