لاہور بورڈ، سٹیٹ افسر کی غیرقانونی تقرری کیس فریقین سے جواب طلب

لاہور بورڈ، سٹیٹ افسر کی غیرقانونی تقرری کیس فریقین سے جواب طلب

  

لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہور ہائیکورٹ نے لاہور بورڈ آف انٹرمیڈیٹ اینڈ سیکنڈری میں سٹیٹ افسر کی مبینہ غیرقانونی تقرری کے خلاف دائردرخواست پر فریقین سے آئند سماعت پرجواب طلب کرلیا ہے،مسٹرجسٹس جواد حسن نے کلرک احمد فراز کی درخواست پر سماعت کی،درخواست گزار کی طرف سے صفدر شاہین پیرزادہ ایڈووکیٹ نے موقف اختیار کیا کہ لاہور بورڈ میں سٹیٹ افسر کی پوسٹ خالی ہے، سیکرٹری لاہور بورڈ نے سیکرٹریٹ ملازم رشتہ دار عارف محمود کو نوازنے کے لیے تبادلہ کرایاسیکرٹری بورڈ عارف محمود کوسٹیٹ افسر کی پوسٹ اپ گریڈ کرکے تعینات کرنا چاہتا ہے، درخواست گزار بورڈ کا ملازم اور سسٹنٹ اسٹیٹ افسر فرائض انجام دے رہا ہے، گریڈ 16 کی اسامی کے لئے اخبار میں اشتہار دینا اور پی ہی ایس کے زریعے ملازمت دی جاتی ہے، پالیسی کے مطابق عارف محمود کا سیکرٹریٹ سے بورڈ میں تبادلہ نہیں کیا جاسکتا، درخواست گزار نے استدعا کی کہ بطور امیدوار میرا 10 سال سے زائد تجربہ، بطورسٹیٹ افسر تعینات کیا جائے،سٹیٹ افسر کی متوقع غیرقانونی تقرری کو کالعدم قرار دیا جائے۔

لاہور بورڈ

مزید :

پشاورصفحہ آخر -