خاصہ دار فورس کے اہلکاروں کو تنخواہیں ادا کی جائیں: قومیہ مشران 

خاصہ دار فورس کے اہلکاروں کو تنخواہیں ادا کی جائیں: قومیہ مشران 

  

  مہمند(نمائندہ پاکستا ن)خاصہ دار فورس کے سینکڑوں اہلکاروں کے بندتنخواہوں کی ادائیگی کیلئے وزیراعلیٰ وعدہ پر عملدرآمد کی جائے۔وعدے کی پانچ ماہ مکمل ہونے پر کوئی پیش رفت نہ ہو سکا۔بند تنخواہیں فوری اداکی جائے۔ بندش کی صورت میں عیدالفطرکے پانچویں روزبڑاقومی جرگہ سمیت احتجاجی دھرنوں کی ڈیڈلائن دے دی گئی۔قومی عمائدین کا بند تنخواہوں کے خلاف پریس کانفرنس۔تفصیلات کے مطابق علاقے کے سرکردہ قومی مشران ملک اعجازخان،ملک امیر نواز خان،ملک اورنگزیب،ملک میاں جان،ملک رئیس خان،ملک نزیر،ملک اجمل،ملک شاہی گل ودیگر نے مہمند پریس کلب میں سینکروں سابقہ خاصہ دارفورس کی گیارہ ماہ سے بندتنخواہوں کے خلاف ایک ہنگامی پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا۔ کہ انضمام سے سینکڑوں سابقہ خاصہ دارفورس کے تنخواہیں بندہوگئے ہیں۔جن کے خلاف قومی مشران نے متاثرہ اہلکاروں سمیت مین پشاور باجوڑ شاہراہ پر تین ماہ غلنئی کے مقام پر احتجاجی کیمپ لگائے تھے۔مگر عوامی نمائندوں کے کوششوں سے وزیراعلیٰ نے مقامی انتظامیہ،کمشنر اورعوامی نمائندوں کے موجودگی میں قبائلی خدمات کا اعتراف کیا۔اور قومی مشران نے حکومت پر واضح کردیا۔کہ قبائلی کوخاصہ داریاں مال وجان کے خدمات کی صلے میں مل چکے ہیں۔جبکہ وزیراعلیٰ نے موقع پرجون2021تک خاصہ دار فورس کی تنخواہیں سابقہ طریقہ سے اداکر نے کا وعدہ کیا۔بلکہ باقاعدہ کمیٹی تشکیل دیا۔مگر وعدے کے پانچ ماہ گزرنے کے باوجود کوئی عملدارآمدنہ ہوا۔جن میں قومی مشران سمیت شہداء خاندانوں کی تنخواہیں بند پڑے ہیں۔جس پرمتاثرہ خاندانوں میں بڑی مایوسی پھیل چکی ہیں۔قومی مشران نے تنخواہوں کی فوری ادائیگی کا پرزور مطالبہ کیا۔اور تنخواہوں کی ادائیگی میں کوتاہی پر متعلقہ  محکموں کے خلاف وزیراعلیٰ سے نوٹس لینے کی اپیل کی۔بصورت دیگرآئندہ عیدالفطر کے پانچویں روز قومی جرگہ کی ڈیڈلائن جاری کردی۔ جس میں آئندہ کیلئے لائحہ عمل اور دوسری قبائلی اضلاع سے رابطہ کرئینگے۔  

مزید :

صفحہ اول -