امریکی دھمکیاں مسترد، روس کی فوج اور جنگی سازوسامان کی سرحد پر منتقلی شروع، خوفناک جنگ کا خطرہ منڈلانے لگا

امریکی دھمکیاں مسترد، روس کی فوج اور جنگی سازوسامان کی سرحد پر منتقلی شروع، ...
امریکی دھمکیاں مسترد، روس کی فوج اور جنگی سازوسامان کی سرحد پر منتقلی شروع، خوفناک جنگ کا خطرہ منڈلانے لگا

  

ماسکو(مانیٹرنگ ڈیسک) یوکرین کے تنازع پر امریکہ اور کئی دیگر عالمی طاقتیں روس کے مخالف کھڑی ہیں۔ امریکہ کی طرف سے ایک سے زائد بار اعلان کیا جا چکا ہے کہ وہ یوکرین کے دفاع کے لیے کسی بھی حد تک جائے گا مگر اب ایک طرف روس نے یوکرین کی سرحد پر مزید فوج اور جنگی سازوسامان بھیجنا شروع کر رکھا ہے اور دوسری طرف ایسی دھمکیاں دے رہا ہے کہ علاقہ خوفناک جنگ کی لپیٹ میں آنے کا خطرہ سرپر منڈلاتا نظر آ رہا ہے۔ میل آن لائن کے مطابق روس کی طرف سے ٹینک اور دیگر حربی سازوسامان یوکرین کے بارڈر پر بھیجے جانے کی تصاویر اور ویڈیوز میڈیا پر نشر کی جا چکی ہے، جس کے بعد یوکرین نے بھی بارڈر پر اپنی فوجی طاقت کو بڑھانے کی کوشش شروع کر دی ہے۔

رپورٹ کے مطابق یوکرین کی طرف سے مزید فوج بارڈر پر بھیجے جانے کی خبریں آنے پر روس کی صدارتی انتظامیہ کے نائب نائب سربراہ دمترے کوزاک نے گزشتہ روز دھمکی دیتے ہوئے کہا ہے کہ ”اگر یوکرین نے بارڈر پر فوج اور جنگی ہتھیار پہنچانے کا سلسلہ جاری رکھا تو یہ اس کے خاتمے کی شروعات ہو گی۔ ہم اس وقت تک حملہ نہیں کریں گے جب تک یوکرین پہلے حملہ نہیں کرتا تاہم اگر یوکرین ایسا کرتا ہے تو پھر روس اب کی بار ٹانگ میں نہیں بلکہ یوکرین کے ماتھے میں گولی مارے گا۔

مزید :

بین الاقوامی -