اسلام آباد ہائیکورٹ، ا وورسیز پاکستانی کیخلاف 4سال بعد نیب انکوائری بند

   اسلام آباد ہائیکورٹ، ا وورسیز پاکستانی کیخلاف 4سال بعد نیب انکوائری بند

  

اسلام آباد(آئی این پی) اسلام آباد ہائیکورٹ نے اوورسیز پاکستانی کیخلاف نیب پنڈی کی کارروائی غیر قانونی اور نیب کی کارروائی کو بیرونی سرمایہ کاروں کے اعتماد میں کمی کا ذمہ دار قرار دے دیا،نیب نے4 سال بعد اوورسیز پاکستانی کیخلاف انکوائری بند کردی۔ پاکستان میں کروڑوں روپے کی سرمایہ کاری کرنے والے اوورسیز پاکستانی کیخلاف 4 سال بعد نیب انکوائری بند کردی گئی ہے، اوورسیز پاکستانی راجہ ظفر عباسی نے 74 کروڑ کی سرمایہ کاری کی جس پر نیب نے انکوائری شروع کردی تھی۔ اسلام آباد ہائیکورٹ نے اوورسیز پاکستانی کیخلاف نیب پنڈی کی کارروائی غیر قانونی قرار دے دی اور نیب کی کاروائی کو بیرونی سرمایہ کاروں کے اعتماد میں کمی کا ذمہ دار قرار دے دیا۔عدالت کا کہنا تھا کہ بغیر ثبوت اوورسیز پاکستانی سرمایہ کار کیخلاف نیب کاروائی بدنیتی ہے، نیب حکام نے اوورسیز پاکستانی کو تین سال الجھا کر آخر میں انکوائری بند کردی، نیب حکام نے اوورسیز پاکستانی کیخلاف کاروائی کرکے ادارے کا قیمتی وقت ضائع کیا۔

اوورسیز پاکستانی

مزید :

پشاورصفحہ آخر -