آئی بی ایم نے انسانی دماغ کی طرح کی چپ بنالی

آئی بی ایم نے انسانی دماغ کی طرح کی چپ بنالی
آئی بی ایم نے انسانی دماغ کی طرح کی چپ بنالی

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

نیویارک (نیوز ڈیسک) انسانی تاریخ میں پہلی دفعہ ایک ایسی کمپیوٹر چپ تیار کرلی گئی ہے جس پر موجود 10 لاکھ ”نیوران“ انسانی دماغ کی طرح کام کرسکتے ہیں۔ یہ چپ مشہور ٹیکنالوجی کمپنی آئی بی ایم (IBM) نے تیار کی ہے۔ ٹرونارتھ نامی اس چپ کا سائز ایک ڈاک ٹکٹ کے برابر ہے اور اس پر 10 لاکھ سرکٹ موجود ہیں جو نیوروسناپٹک خصوصیات کی وجہ سے دماغ کے خلیوں کا کام کریں گی۔ لارنس برکلے نیشنل لیبارٹری کے سائنسدان ہورسٹ سائمن نے اخبار نیویارک ٹائمز کو بتایا کہ آج کل جدید پروسیسر میں تقریباً ڈیڑھ ارب ٹرانزسٹر ہوتے ہیں اور یہ 140 واٹ توانائی استعمال کرتے ہیں جبکہ IBM کی چپ میں تقریباً ساڑھے پانچ ارب ڈالر ٹرانزسٹر ہیں اور یہ صرف 70 ملی واٹ استعمال کرتی ہے۔ واضح رہے کہ انسانی دماغ میں تقریباً 100 ارب نیوران ہوتے ہیں اس لئے اس چپ کی طاقت انسانی دماغ سے تو بہت کم ہے لیکن یہ اس لحاظ سے ایک بڑی پیش رفت ہے کہ یہ انسانی دماغ سے ملتے جلتے افعال سرانجام دے سکتی ہے۔ اس کی مدد سے اب یہ ممکن ہوگیا ہے کہ کمپیوٹر اپنے طور پر سوچنے اور فیصلہ کرنے کے قابل ہوگیا ہے۔ ٹرونارتھ چپ تیل کی پائپ لائن میں لیک اور سونامی کی وارننگ جیسے اہم کام انسانی مدد کے بغیر کرسکتی ہے۔