موبائل کھمبوں کے نزدیک رہنے والے خبردار ہوجائیں

موبائل کھمبوں کے نزدیک رہنے والے خبردار ہوجائیں
موبائل کھمبوں کے نزدیک رہنے والے خبردار ہوجائیں

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

لندن (نیوزڈیسک ) ویسے تو آپ نے موبائل فون کے صحت پر منفی اثرات کے بارے میں سن رکھا ہوگا لیکن ایک تحقیق میں یہ بات بھی سامنے آئی ہے کہ وہ لوگ جن کے گھر موبائل فون کے کھمبوں کے پاس ہوتے ہیں ، ان کی صحت بھی کچھ خاص ٹھیک نہیں رہتی۔ برطانوی تحقیق کے مطابق کہ یہ بات مشاہدے میں آئی ہے کہ جن لوگوں کے گھر موبائل فون کے کھمبوں کے پاس ہوتے ہیں ان کی یاداشت، سر میں درد، ذہنی تناﺅ وغیرہ دیکھنے میں آتا ہے۔ تحقیق کے مطابق موبائل کھمبوں سے خطرناک شعاعیں نکلتی ہیں جو انسان کے دماغ پر انتہائی منفی اثرات مرتب کرتی ہیں۔ اس کے علاوہ یہ انسان کے تولیدی نظام پر بھی خطرناک اثرات چھوڑتی ہیں۔
قبل ازیں موبائل فون کے متعلق کی گئی تحقیقا ت میں بھی یہ کہا گیا ہے کہ موبائل فون سے برقی مقناطیسی شعاعیں (electromagnetic radiation) نکلتی ہیں، جو دو طرح سے صحت کو نقصان پہنچاتی ہیں، تھرمل اور نان تھرمل یعنی حرارت اور حرارت کے بغیر انسانی صحت کو متاثر کرتی ہیں۔ تھرمل اثرات کا جائزہ ایسی صورت میں باآسانی لیا جا سکتا ہے، جب کچھ دیر تک مسلسل موبائل فون آپ کے کان سے لگا رہے۔ ایسی حالت میں کان پر پسینہ آجاتا ہے، جو اس کابات کا واضح ثبوت ہے کہ موبائل فون تھرمل اثرات مرتب کر رہا ہے۔ جبکہ نان تھرمل کے اثرات براہ راست انسانی خلیوں، جینز اور ڈی این اے پر پڑتے ہیں اور یہ قسم ہی انسان کے لئے زیادہ خطرناک ہے۔ موبائل فون کا حد سے زیادہ استعمال سردرد، نیند میں خرابی، یاداشت کی کمزوری جیسے مسائل پیدا کرنے کے علاوہ دماغی کینسر تک کا باعث بن سکتا ہے۔ سائنسدانوںکا مزید کہنا ہے کہ ان بیماریوں کے علاوہ موبائل فون کا زیادہ استعمال تولیدی صلاحیتوں کو کمزور، اسقاط حمل اور دل کے امراض کا بھی سبب بن سکتا ہے۔