ودہولڈنگ اور گین ٹیکس میں اضافہ ، اشٹام فروش ایسوسی ایشن کا احتجاج

ودہولڈنگ اور گین ٹیکس میں اضافہ ، اشٹام فروش ایسوسی ایشن کا احتجاج

  لاہور(اپنے نمائندے سے)پراپرٹی کی خریدو فروخت پر عائد کر دہ گین،ودہولڈنگ ،پراپرٹی ٹیکس اور پراپرٹی پر جاری کردہ ڈی سی ریٹ (شیڈول ریٹس ) میں ایف بی آر کی جانب سے 70فیصد کئے جانے والے اضافے پر صوبے بھر میں جائیدادوں کی خریدو فروخت اور منتقلی کو بریک لگ گئی،صوبائی دارالحکومت میں اشٹام فروش ایسوسی ایشن کی جانب سے بھی شدید مزاحمت اور مظاہرے شروع ہوگئے ،ڈی سی ریٹ کو مسترد کرنے کا مطالبہ کر دیا،روزنامہ پاکستان کی جانب سے کئے جانے والے سروے کے دوران اشٹام سیلرزایسوسی ایشن کے جنرل سیکرٹری شیخ کامران بشیر کا کہنا ہے کہ پراپرٹی پر لگائے گئے ظالمانہ گین ٹیکس ،ود ہولڈنگ اور پراپرٹی کے جاری کردہ سال 2016-17ڈی سی کلکٹر ریٹس میں ایف بی آر کے 60سے 70فیصد مزید اضافے کے فوائد کی بجائے بہت نقصان ہیں ۔ہمارا مطالبہ ہے پراپرٹی کی خریدو فروخت پر لگائے گئے ظالمانہ 10فیصد گین ٹیکس اور 40لاکھ مالیت کی رجسٹری پر 4فیصد ود ہولڈنگ ٹیکس کے جاری کردہ آرڈینس کو فوری طور ختم کیا جائے ۔ورنہ گزشتہ سالوں ریونیو کی نسبت سال 2016-17کے ریونیو میں 70فیصد تک کمی ہوسکتی ہے ۔اشٹام فروش وحید احمد،عمران اشرف ،وحید ایڈوکیٹ نے کہا کہ اس وقت ملک میں 75فیصد پراپرٹی کی خریدوفروخت کرتے تھے یہ انوسٹر حضرات اب دس فیصد گین ٹیکس اور چالیس لاکھ مالیت پر ود ہولڈنگ ٹیکس کی وجہ سےء ایسی کوئی انوسٹمنٹ نہیں کریں گے اور ان سے وابستہ ہزاروں افراد جن میں ٹھیکدار اور پلمبر،کارپینٹر،رنگ و روغن کرنے والے اور رئیل اسٹیٹ اور اشٹام فروش حضرات کے روزگار میں 80فیصد تک کمی آئے گی ۔اس طرح کے ہتھکنڈے ملک کے ریونیو کے ساتھ عوام کو بھی بیوقوف بنانے کے مترادف ہیں ۔ہمارا مطالبہ ہے کہ گین ٹیکساور ودہولڈنگ ٹیکس کے جاری کردہ آرڈینس کو فوری ختم کریں ۔

مزید : میٹروپولیٹن 1