منرل واٹر کی فروخت کیخلاف ازخود نوٹس کیس میں متفرق درخواست دائر

منرل واٹر کی فروخت کیخلاف ازخود نوٹس کیس میں متفرق درخواست دائر

لاہور(نامہ نگار خصوصی )سپریم کورٹ میں منرل واٹر کی فروخت کے خلاف ازخود نوٹس کیس میں متفرق درخواست دائر کر دی گئی ہے درخواست میں استدعا کی گئی ہے کہ مضر صحت پانی بیچنے والوں کو چین کی طرح سزائے موت دینے کا حکم دیا جائے۔سپریم کورٹ لاہوررجسٹری میں یہ متفرق درخواست وطن پارٹی کے بیرسٹر ظفر اللہ خان کی طرف سے دائر کی گئی ہے جس میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ تمام بڑی چھوٹی کمپنیاں مضر صحت منرل واٹر کی فروخت میں ملوث ہیں، مضر صحت پانی کی وجہ سے ہر سال 10لاکھ افراد ہیپا ٹائٹس کا شکار ہو رہے ہیں، درخواست میں کہا گیا ہے کہ دھوپ لگنے کے بعد بوتل کے کیمیکلز پانی میں شامل ہوجاتے ہیں جبکہ 24گھنٹے بوتل میں بند رہنے کے بعد منرل واٹر ازخود مضر صحت ہو جاتا ہے، منرل واٹر بنانے والی کمپنیاں بااثر ہیں اس لئے کوئی سرکاری محکمہ ان کے خلاف کارروائی نہیں کرتا، درخواست میں استدعا کی گئی ہے کہ تمام کمپنیوں کے منرل واٹر پر پابندی عائد کی جائے اور مضر صحت پانی اور دودھ کی فروخت میں ملوث افراد کو چین کی طرح سزائے موت دی جائے، درخواست میں یہ بھی استدعا کی گئی ہے کہ حکومت کو 500 فٹ گہرے ٹیوب ویل کھود کر عوام کو صاف پانی فراہم کرنے کا حکم دیا جائے۔

مزید : صفحہ آخر