ہائیکورٹ نے پیمرا کے 60افسروں کی متنازع سنیارٹی لسٹ پر عملدآمد روکدیا

ہائیکورٹ نے پیمرا کے 60افسروں کی متنازع سنیارٹی لسٹ پر عملدآمد روکدیا

لاہور(نامہ نگار خصوصی )لاہور ہائیکورٹ نے پیمرا کے 60افسروں کی متنازع سنیارٹی لسٹ پر عملدآمد روکتے ہوئے چیئرمین پیمر ابصار عالم سے 30اگست تک وضاحت طلب کر لی ہے ۔جسٹس عاطر محمود نے اسسٹنٹ مینجر پیمرا لاہور حافظ جمیل اصغر کی درخواست پر سماعت کی، درخواست گزار کی طرف سے شہزادہ مظہر ایڈووکیٹ نے موقف اختیار کیا کہ چیئرمین پیمرا ابصار عالم نے منظور نظر افراد کو نوازنے کے لئے پیمرا میں 8کیٹگریز بنا کر سنیارٹی لسٹ مرتب کی ہے جس کی وجہ سے سینئر افسر جونیئر اور جونیئر افسر سینئر بن گئے ہیں۔انہوں نے کہا کہ چیئرمین پیمرا نے متنازع سنیارٹی پر عملدآمد کرنے کے لئے آئندہ ہفتے محکمانہ پروموشن کمیٹی کا اجلاس بھی طلب کر لیا ہے۔ پیمرا میں ترقیوں کے معاملے پر سینئر افسروں کو نظرانداز کیا جا رہا ہے ، انہوں نے استدعا کی کہ پیمرا کی محکمانہ پرموشن کمیٹی کا اجلاس اور متنازع سنیارٹی لسٹ پر عملدرآمد روکنے ،ملازمت کے قانون کے مطابق پیمرا کے افسروں کو ترقیاں دینے کا حکم دیا جائے۔ عدالت نے دوران سماعت ریمارکس دیئے کہ بادی النظر میں کیٹگریز بنا کر سنیارٹی فہرستیں مرتب کرنا قانون کی خلاف ورزی ہے، عدالت نے پیمرا افسروں کی متنازع سنیارٹی لسٹ پر عملدرآمد روکتے ہوئے چیئرمین پیمرا ابصار عالم سے 30اگست تک وضاحت طلب کر لی ہے ۔

مزید : صفحہ آخر