برہان وانی کے والد کا دوبیٹوں کے بعد اکلوتی بیٹی کو بھی کشمیر کی آزادی پر قربان کرنے کا اعلان

برہان وانی کے والد کا دوبیٹوں کے بعد اکلوتی بیٹی کو بھی کشمیر کی آزادی پر ...

 بیسرینگر (نیوز ڈیسک)کشمیر کی آزادی کی تحریک کو اپنے خون سے نئی زندگی بخشنے والے کشمیری مجاہد برہان مظفر وانی کی شہادت کے چند ہی دن بعد ان کے والد مظفر وانی نے ایک ایسا اعلان کر دیا ہے کہ ان کی ہمت و جرات نے غاصب بھارت کی بنیادیں ہلا کر رکھ دی ہیں۔ مظفر احمد وانی نے اپنے دو بیٹوں کی شہادت کے بعد اپنی اکلوتی بیٹی کو بھی کشمیر کی آزادی پر قربان کرنے کا اعلان کر دیا ہے۔ا خبار ٹائمز آف انڈیا کی رپورٹ کے مطابق جمعہ کے روز مظفر وانی نے پامپور کے علاقہ میں ایک جلوس کی قیادت کی جس میں بھارتی فوج کے کرفیو کے باوجود ہزاروں کی تعداد میں کشمیریوں نے شرکت کی۔ا خبار کا کہنا ہے کہ مظفروانی کے لئے کشمیری یوں دیوانہ وار نکلے کہ انہوں نے قابض فوج کے خوفناک کرفیو کے باعث اپنی جانوں کو لاحق خطرے کی بھی پروا نہیں کی۔ بھارتی میڈیا اب واضح الفاظ میں اس خوف کا اظہار کررہا ہے کہ مظفر وانی کا جوش وجذبہ ایک ایسی تحریک برپا کرنے والا ہے کہ بھارت پچھلی تمام تحریکوں کو بھول جائے گا۔اخبار کا کہنا ہے کہ روایتی علیحدگی پسند کشمیری قیادت، جس میں سید علی گیلانی، میرواعظ عمر فاروق اور یاسین ملک جیسی شخصیات شامل ہیں، نے درگاہ حضرت بل کی طرف مارچ کا اعلان کیا تھا، مگر پوری مقبوضہ وادی سے ہزاروں کی تعداد میں کشمیری کرفیو کی پرواہ نہ کرتے ہوئے مظفر وانی کی ایک جھلک دیکھنے کے لئے پامپور پہنچ گئے، جو بھارت سرکار کے لئے ایک نئے خطرے کی گھنٹی ہے۔مظفر وانی کے بڑے صاحبزادے خالد وانی 2010ء4 میں بھارتی فوج کی فائرنگ میں شہید ہوگئے، ان کے دوسرے بیٹے برہان وانی نے حال ہی میں شہادت پائی، اور اب پامپور کے تاریخی جلوس میں انہوں نے اپنی اکلوتی بیٹی کو بھی کشمیر کی آزادی پر قربان کرنے کا اعلان کردیا۔ جس قوم میں قربانی کا جذبہ اس عروج کو پہنچ چکا ہو اسے بھارت تو کیا ساری دنیا ملکر بھی آزاد ہونے سے روک نہیں سکتی۔

مزید : علاقائی