” را“ پر الزام لگانے سے کام نہیں چلے گا، سانحہ کوئٹہ پاکستانی ایجنسیوں کی ناکامی ہے، افسران برطرف کریں: محمود خان اچکزئی

” را“ پر الزام لگانے سے کام نہیں چلے گا، سانحہ کوئٹہ پاکستانی ایجنسیوں کی ...
” را“ پر الزام لگانے سے کام نہیں چلے گا، سانحہ کوئٹہ پاکستانی ایجنسیوں کی ناکامی ہے، افسران برطرف کریں: محمود خان اچکزئی

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) پختونخوا ملی عوامی پارٹی کے سربراہ محمود خان اچکزئی نے سانحہ کوئٹہ میں بھارتی خفیہ ایجنسی ” را“ کو کلین چٹ دیتے ہوئے سارا ملبہ پاکستانی ایجنسیوں پر ڈال دیا ہے۔ انہوں نے آئندہ پارلیمنٹ میں کسی بھی واقعے پر فاتحہ خوانی کرنے سے انکار کرتے ہوئے ملکی سکیورٹی صورتحال پر پارلیمنٹ کا مشترکہ اجلاس بلانے کا بھی مطالبہ کیا ہے۔

سانحہ کوئٹہ کے حوالے سے بلائے گئے قومی اسمبلی کے اجلاس میں محمود خان اچکزئی کا کہنا تھا کہ ” را“ پر الزام لگانے سے کام نہیں چلے گا سارے سماج دشمن ایجنسیوں کے پے رول پر ہیں۔ ایجنسیاں گندلے پانی سے سوئی ڈھونڈ سکتی ہیں لیکن سانحہ کوئٹہ نہ روک پانا انٹیلی جنس ایجنسیوں کی ناکامی ہے ۔ نتائج نہ دینے والے انٹیلی جنس افسران کو برطرف کیا جائے۔

محمود خان اچکزئی کی ہرزہ سرائی ، خیبر پختونخوا کو افغانستان کا حصہ قرار دے دیا

انہوں نے کہا کہ ملکی سکیورٹی صورتحال پر پارلیمنٹ کا مشترکہ اجلاس بلایا جائے جس میں ہمیں فیصلہ کرنا ہوگا کہ کسی کی پراکسی وار نہیں لڑیں گے دہشتگردی کے خلاف بلا امتیاز کارروائیاں ضروری ہیں۔ کیا ایوان صرف دعاؤں کیلئے ہے میں آئندہ پارلیمنٹ میں فاتحہ خوانی نہیں کروں گا۔

تمام پشتون افغان ہیں، رہیں گے، ڈیورنڈ لائن کی مانیٹرنگ امریکہ، چین کو دے دی جائے: محمود اچکزئی

واضح رہے کہ محمود خان اچکزئی انتہائی نازک وقت میں اس قسم کے بیانات دینے میں مہارت رکھتے ہیں۔ گزشتہ دنوں بھی انہوں نے پاکستان کے صوبے خیبر پختونخوا کو افغانستان کا حصہ قرار دیا تھا۔

مزید : قومی /اہم خبریں