کرپشن، شکایات، ڈولفن فورس الگ یونٹ، علیحدہ ڈی آئی جی کا امکان

کرپشن، شکایات، ڈولفن فورس الگ یونٹ، علیحدہ ڈی آئی جی کا امکان
کرپشن، شکایات، ڈولفن فورس الگ یونٹ، علیحدہ ڈی آئی جی کا امکان

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

لاہور (ویب ڈیسک) ڈولفن فورس کی بڑھتی ہوئی کرپشن کی داستانیں اور شکایات کے بعد لاہور میں علیحدہ یونٹ بنانے کے لئے سوچ بچار شروع کردیا گیا ہے، ڈولفن فورس کا علیحدہ ڈی آئی جی تعینات کئے جانے کا بھی امکان ہے۔ ڈولفن فورس کے دفاتر کے لئے کرائے کی مد میں ملنے والے 50 لاکھ روپے اور گملوں کے لئے ملنے والے 28لاکھ روپے بھی لاپتہ ہوگئے۔

روزنامہ خبریں کے مطابق ڈولفن فورس کی روز بہ روز بڑھتی ہوئی کرپشن، شکایات اور ان کی ناقص سپر ویژن ہونے کی وجہ سے آئی جی پنجاب مشتاق احمد سکھیرا نے متعدد بار لاہور پولیس کے افسران کی سخت الفاظ میں سرزنش کی ہے اور ان کو ہدایات جاری کی ہیں کہ وہ ان کی کارکردگی کو بہتر بنائیں اور ان کی کارکردگی کی مکمل مانیٹرنگ کی جائے۔ جس کے بعد لاہور پولیس کے افسران نے سر جوڑ کو ڈولفن فورس کی کارکردگی کو مزید بہتر بنانے کے لئے سوچ بچار شروع کردیا گیا ہے۔ ایلیٹ فورس لاہور، پیرو، مجاہد سکواڈ اور ڈولفن فورس کو ضلع پولیس سے علیحدہ کردئیے جانے کا امکان ہے۔ ڈولفن فورس کو ایک مکمل یونٹ بنایا جانے کا امکان ہے جس کے لئے ایک علیحدہ ڈی آئی جی رینک کا افسر اس یونٹ کی کمانڈ کرے گا۔ اس حوالے سے لاہور پولیس کے افسران نے آئی جی پنجاب کو بھی مطلع کیا ہے تاکہ ان کی جانب سے منظوری کے بعد ان کو علیحدہ کردیا جائے۔ لاہور پولیس کے ایک اعلیٰ افسر کو ڈولفن فورس کا ڈی آئی جی تعینات کئے جانے کے بارے میں بھی غور کیا جارہا ہے۔ اخبار کے مطابق ڈولفن فورس کی 6 ڈویژنوں کے لئے قائم ہونے والے دفاتر بھی سست روی کا شکار ہے جس کی وجہ سے ڈولفن فورس کے سرکل افسران قربان لائن میں ہی بیٹھ کر اپنی اپنی ڈویژنوں کی کمانڈ کرتے ہیں۔

ڈولفن فورس کے سرکل افسران ڈی ایس پیز کو گشت کرنے کے لئے نئی گاڑیاں دی گئی ہیں اور 40 لٹر روزانہ پٹرول دیاجارہا ہے جبکہ تھانوں کے ایس ڈی پی اوز کے پاس تاحال پرانی گاڑیاں ہیں جن کو گشت اورپٹرولنگ کے لئے 20 لٹر روزانہ پٹرول دیا جاتا ہے۔ ڈولفن فورس کے سرکل افسران دن بھر ٹھنڈے کمروں میں بیٹھ کر گزار دیتے ہیں جبکہ سرکاری وسائل کا بے دریغ استعمال کیا جارہا ہے۔ ذرائع نے مزید بتایا ہے کہ ڈولفن فورس کے عملے کو بلڈنگ کرائے پر لینے کے لئے 50 لاکھ روپے کی خطیر رقم دی گئی تھی جبکہ گملے خریدنے کے لئے 28 لاکھ روپے دئیے گئے تھے جن کا تاحال علم نہیں ہے کہ یہ اتنی خطیر رقم کس کے کھاتے میں گئی ہے۔ ڈولفن فورس کو آئندہ چند روز میں علیحدہ یونٹ بنانے کا نوٹیفکیشن کئے جانے کا امکان ہے۔

مزید : لاہور