مفت این او سی ختم ، ٹیپانے سروس جارچز ٹیکس عائد کر دیا

مفت این او سی ختم ، ٹیپانے سروس جارچز ٹیکس عائد کر دیا

لاہور(جاوید اقبال)ٹیپا کو اپنے پاؤں پر کھڑا کرنے کے لیے این اوسی جاری کرنے پر سروسز چارجز ٹیکس عائد کر دیا گیا ہے۔یہ ٹیکس اس ادارہ کی تیس سالہ تاریخ میں پہلی دفعہ عائد کیا گیا ہے پٹرول پمپ کا این او سی جاری کرنے کے لیے تین لاکھ پانچ ہزار سروسز چارجز فیس وصول کی جائے گی۔کیس جمع کرنے کی فیس پانچ ہزار جبکہ مکمل این او سی جاری کرنے کا تین لاکھ وصول کیا جائے گا۔جس کی اتھارٹی نے باقاعدہ طور پر منظوری دی ہے اور ڈائریکٹر ایڈمن اینڈ فنانس عرفان احمد نے اس کا باقاعدہ طور پر نوٹیفیکیشن جاری کر دیا ہے جس کے مطابق سروسز چارجز ٹیکس گزشتہ روز سے لاگو کر دیا گیا ہے۔ٹیپا کی تاریخ میں یہ اقدام سنگ میل کی حیثیت رکھتا ہے ذرائع کا کہنا ہے کہ ڈائریکٹر ایڈمن عرفان احمد نے چیف انجینئر سیف الرحمان کو ٹیپا کو اپنے پاؤں پر کھڑا کرنے کے لیے آمدن کے ذرائع پیدا کرنے کی تجاویز دیں جو انہوں نے مثبت قرار دیتے ہوئے اتھارٹی میں پیش کرنے کا کہا۔اتھارٹی کے حالیہ اجلاس میں اس کی سمری پیش کی گئی جس میں فوری طور پر اس کی منظوری دے دی اور گزشتہ روز لاگو کر دیا گیا۔ذرائع کا کہنا ہے کہ ڈائریکٹر ایڈمن عرفان احمد نے ٹیپا میں ریونیو جنریشن سسٹم رائج کرنے سے پہلے جب وہ ٹیوٹا میں ڈائریکٹر ایڈمن تھے تو انہوں نے پنجاب کی جیلوں میں پہلی دفعہ وزیر اعلیٰ پنجاب کے حکم پر مرحلہ وار قیدیوں کے لیے ٹیکنیکل کورسز متعارف کروائے۔بعد ازاں ڈائریکٹر ایڈمن واسا تعینات ہوئے تو ملازمین کی کام چوری ختم کرنے کے لیے بائیو میٹرک سسٹم شروع کرایا اور ریپڈ پنشن سسٹم بھی ان کے کریڈٹ پرہے۔کمرشلائزیشن کے لیے ٹیپا سے این او سی لینا لازمی قرار دیا گیا ہے عارضی فیس دس ہزار روپے ہو گی کمرشل عمارتوں کی مستقل کمرشلائزیشن کی فیس ساڑھے پانچ لاکھ ادا کرنی ہو گی۔کسی بھی کمرشل عمارت کا کمپلیشن سرٹیفیکیٹ جاری کرنے کے لیے ٹیپا کا این او سی لازمی قرار دیا گیا ہے اگر کسی کمرشل عمارت کی پارکنگ میں ترمیم کرنا ہو گی تو اس کی فیس پانچ لاکھ روپیہ این او سی مقرر کر دی گئی ہے۔پرائیوٹ ہاؤسنگ سکیموں کے اندر سڑکوں کی سب ڈویژن کے لیے بھی ٹیپا کا این او سی لازمی قرار دے دیا گیا ہے جو نقشہ پاس کروانے سے پہلے لازم حاصل کرنا ہو گا۔400 کنال رقبہ کی ہاؤسنگ سیکم پر ڈھائی لاکھ،چار سو سے آٹھ سو کنال کی سکیم پانچ لاکھ اور آٹھ سوسے زائد کی سکیم کے لیے ساڑھے سات لاکھ این او سی فیس مقرر کر دی گئی ہے۔کمرشل بلڈنگ شاپس پلازہ،ہسپتال سکول کی این او سی فیس دس ہزارجبکہ ایک کنال تک کے گھر کے لیے این او سی فیس پانچ ہزار مقرر کی گئی ہے۔ٹریفک کاؤنٹنگ سروے کے لیے بھی 85000 سے ایک لاکھ چالیس ہزار تک فیس مقرر کی گئی ہے جس میں ہر سال دس فیصد اضافہ ہو گا۔اس حوالے سے ڈائریکٹر ایڈمن عرفان احمد کا کہنا ہے کہ آئندہ جو بھی کیسز آئیں گے موجودہ شیڈول کے مطابق انہیں این او سی فیس ادا کرنی ہو گی اس اقدام سے پہلی دفعہ ٹیپا میں ریونیو جنریشن شروع ہو گیا ہے۔انہوں نے کہا کہ اس اقدام سے ٹیپا بہت جلد اپنے پاؤں پر کھڑا ہو جائے گا اور اس پر ہم ایل ڈی اے کے ڈائریکٹر جنرل زاہد اختر کے شکر گزار ہیں جنہوں نے ہماری گزارشات قبول کیں اور ان پر فوری عملدرآمد بھی کرویا۔

مزید : میٹروپولیٹن 1