ظلم و تشدد اور قتل عام سے حالات معمول پر نہیں لائے جاسکتے

ظلم و تشدد اور قتل عام سے حالات معمول پر نہیں لائے جاسکتے

سرینگر (اے پی پی) مقبوضہ کشمیرمیں کل جماعتی حریت کانفرنس نے بھارت کے وزیر مملکت اور حکمران جماعت بی جے پی کے لیڈر ڈاکٹر جتیندر سنگھ کے حالیہ بیان جس میں انہوں نے کہا تھاکہ بھارتی حکومت وادی کشمیر میں حالات کو معمول پر لانے کیلئے اقدامات کررہی ہے پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ ظلم و تشدد اورقتل عام جیسی کارروائیوں سے مقبوضہ علاقے میں حالات معمول پر نہیں لائے جاسکتے ہیں۔ کشمیرمیڈیاسروس کے مطابق حریت کانفرنس کے ترجمان نے سرینگر میں جاری بیان میں کہاکہ ظلم و تشدد اور خوف و ہراس سے نہ تو ماضی میں کشمیریوں کے جذبہ حریت کو کمزور کیاجاسکا ہے اور نہ ہی مستقبل میں کشمیری عوام اپنی حق پر مبنی جدوجہد آزادی سے دستبردار ہوں گے۔انہوں نے کہا کہ ماضی میں بھی بھارت ظلم و تشدد کے ذریعے کشمیریوں کی جدوجہد آزادی کو کمزور کرنے میں ناکام رہا ہے اور آئندہ بھی وہ اپنے مذموم عزائم میں ہر گز کامیاب نہیں ہو گا۔ انہوں نے کہا کہ بھارتی حکومت اپنی مقامی کٹھ پتلیوں کے ساتھ مل کر اشتعال کے ذریعے کشمیریوں کی جدوجہد آزادی کو بدنام کرنے اور انکی کردار کْشی میں مصروف ہے جس سے اسے محض رسوائی کے اور کچھ حاصل نہیں ہوسکتا۔ ترجمان نے واضح کیاکہ جب تک بھارتی حکومت کشمیریوں سے کئے گئے اپنے وعدے پورے اور بے لگام بھارتی فوجیوں کو لگام نہیں دیتی صورتحال دن بہ دن خراب ہوتی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ حالات کومعمول پر لانے کی باتیں کرنے والے نہتے کشمیریوں کی نسل کْشی کررہے ہیں ۔

اور گزشتہ ایک سال میں سینکڑوں کشمیریوں کو شہید کردیاگیا ہے ۔بھارتی تحقیقاتی ادارے این آئی اے کی طرف سے نو حریت رہنماؤں کی گرفتاری پر ردعمل ظاہر کرتے ہوئے ترجمان نے کہاکہ حریت رہنماؤں کی کردار کشیُ بھارتی حکومت کا اصل ہدف ہے اور انہیں جعلی اور بے بنیاد مقدمات میں ملوث کر کے عدالتی ٹرائل کی بجائے میڈیا پر ٹرائل چلایا جارہا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ بھارتی حکومت مقبوضہ کشمیر میں بْری طرح سے ناکام ہوچکی ہے اور اپنی اس رسوائی کو چھپانے کے لیے حریت راہنماؤں کے خلاف میڈیا ٹرائل چلارہی ہے، تاکہ مسئلہ کشمیر کے حوالے سے عالمی برادری کوگمراہ کیا جاسکے اور مسئلہ کشمیر کے حل سے اس کی توجہ ہٹائی جاسکے اور کشمیریوں کی جدوجہد آزادی کو بدنام کیا جاسکے ۔ ترجمان نے کہاکہ این آئی اے کے ذریعے بھارتی ریاستی دہشت گردی پر عالمی برادری کی خاموشی مجرمانہ ہے جس کا بھارت بھرپور فائدہ اٹھارہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ بھارت نے کشمیری عوام کے خلاف این آئی اے کے ذریعے جنگ جیسی صورتحال پیدا کررکھی ہے جس کے خلاف ردّعمل فطری ہے۔ انہوں نے این آئی اے کی طرف سے حریت رہنماء دیوندر سنگھ کے اہلخانہ حراساں کرنے کی بھی شدیدمذمت کی ہے۔دریں اثناء تحریک حریت کا ایک وفد حال ہی میں شہید ہونے والے کشمیری نوجوانوں کے اہل خانہ سے اظہار ہمدردی اور یکجہتی کیلئے امرگڑھ سوپور اوربارہمولہ گیا۔ وفد نے شہید نوجوانوں کے اہلخانہ کو حریت چیئرمین سید علی گیلانی کا تعزیتی پیغام بھی پہنچایا۔وفد میں شاہ ولی محمد، بشیر احمد قریشی، نظیر احمد خواجہ اور ضلع بارہمولہ کے کارکن شامل تھے ۔

مزید : عالمی منظر