نیدر لینڈ کے آلودہ انڈے برطانیہ اور فرانس میں بھی بکنے لگے

نیدر لینڈ کے آلودہ انڈے برطانیہ اور فرانس میں بھی بکنے لگے
 نیدر لینڈ کے آلودہ انڈے برطانیہ اور فرانس میں بھی بکنے لگے

  

پیرس(مانیٹرنگ ڈیسک) فرانس کی وزارت زراعت کا کہنا ہے کہ پہلی بار نیدرلینڈ میں وجود میں آنے والے یہ انڈے فرانس میں بھی پائے گئے ہیں۔برطانیہ میں فوڈ کا معیار طے کرنے والی ایجنسی ایف ایس اے کا کہنا ہے کہ اس سے عوام کو خطرہ نہ ہونے کے برابر ہے۔ایجنسی فوری طور پر اس معاملے کی جانچ کر رہی ہے لیکن ان کی معلومات کے مطابق اب یہ انڈے ملک میں کہیں نہیں ہیں۔ ایجنسی کا کہنا ہے کہ برطانیہ کے عوام کو انڈے کھانا بند نہیں کرنا چاہیے کیونکہ ممکنہ طور پر اس کے کھانے کے بعد بھی کوئی نقصان نہیں پہنچے گا۔یہ معاملہ اس وقت سامنے آیا جب جرمنی میں سپرمارکیٹ کے ایک سلسلے آلڈی نے تمام انڈے اپنی دکان سے ہٹا لیے۔جانچ میں فپرونل نامی کیمیائی مادے کی انڈے میں موجودگی کا پتہ چلا ہے جس سے گردے، کلیجی اور تھائرائڈ گلینڈ متاثر ہو سکتے ہیں۔نیدر لینڈ کی کاشتکاری کی تنظیم ایل ٹی او کا کہنا ہے کہ انڈے سے اس کیڑا کش دواؤں کے اثرات کو ختم کرنے کے لیے انھیں اندیشہ ہے کہ لاکھوں مرغیوں کو مارنا ہوگا۔برطانیہ فوڈ سٹینڈرڈ ایجنسی نے کہا ہے کہ تمام حاصل معلومات کی بنیاد پر ہمارا یہ تجزیہ ہے کہ اس کے کھانے سے صحت پر کوئی مضر اثرات مرتب نہیں ہوں گے۔

انڈے

مزید : صفحہ اول