صوبائی دارالحکومت میں ہڑتالی ڈاکٹروں نے حکمت عملی تبدیل کر لی

صوبائی دارالحکومت میں ہڑتالی ڈاکٹروں نے حکمت عملی تبدیل کر لی

لاہور(جنرل رپورٹر) صوبائی دارلحکومت میں ہڑتالی ڈاکٹروں نے حکمت عملی تبدیل کر دی ہے نئی حکمت عملی کے تحت ینگ ڈاکٹروں نے آؤٹ ڈورز اور ان ڈورز میں صبح سویرے حاضری لگانا شروع کر دی ہے اور حاضریاں لگا کر دس سے پندرہ منٹ تک اپنی اپنی ڈیوٹی پر فرائض سر انجام دیتے ہیں اور اپنی موجودگی کی ویڈیوز اور تصاویر بنا کر بغیر مریض دیکھے رفو چکر ہو جاتے ہیں۔ دوسری طرف گزشتہ روز سروسز ہسپتال کے آؤٹ ڈور میں انتظامیہ اور ینگ ڈاکٹروں میں تصادم ہوتے ہوتے رہ گیا ینگ ڈاکٹروں نے آؤٹ ڈورز میں حاضری رجسٹر میں حاضریاں لگائیں اور بعد ازاں آؤٹ ڈورز کے تمام کمروں کو تالے لگا دیے۔اور پرچی کاؤنٹرز زبردستی بند کرا دیے اطلاع ملنے پر لاہور سمیت پنجاب بھر میں آٹھویں روز بھی ینگ ڈاکٹرز کی ہڑتال جاری، ان ڈور اور آؤٹ ڈور میں کام بند ہونے سے مریضوں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ تفصیلات کے مطابق ینگ ڈاکٹرز ضد پر اڑ گئے، لاہور سمیت پنجاب کے ہسپتالوں میں آٹھویں روز بھی ہڑتال، ان ڈور اور آؤٹ ڈور بند ہیں، جس کی وجہ سے دور دراز سے آنے والے مریضوں اور ان کے لواحقین کو شدید پریشانی کا سامنا کرنا پڑرہا ہے۔ڈاکٹروں اور ینگ ڈاکٹرز کی جنگ میں مریض پس رہے ہیں، مریضوں کا کہنا ہے کہ کہ ڈاکٹرز اور پنجاب حکومت اپنے مسائل حل کرے تاکہ غریب لوگوں کو علاج کی سہولت میسر آسکے۔لاہور کے سروسز ہسپتال، جناح ہسپتال میں بھی ینگ ڈاکٹرز کی ہڑتال جاری ہے۔ ان اور آؤٹ ڈور میں مکمل بائیکاٹ ہے ، سینئر ڈاکٹرز او پی ڈی اور آؤٹ ڈور میں کام کر رہے ہیں۔واضح رہے کہ محکمہ صحت نے اب تک 71 ہڑتالی ڈاکٹروں کو برطرف کردیا اور نئے میڈیکل آفیسرز اور ڈاکٹروں کو بھرتی کیا جارہا ہے۔

مزید : صفحہ آخر