قبائل کے ،مستقبل کا فیصلہ ان کی خواہشات کے مطابق کرنا ناگزیر ہے : مولانا عبدالشکور

قبائل کے ،مستقبل کا فیصلہ ان کی خواہشات کے مطابق کرنا ناگزیر ہے : مولانا ...

پارا چنار ( نمائندہ پاکستان )جمیعت علمائے اسلام فاٹا کے امیر مفتی عبدالشکور نے کہا ہے کہ قبائل کے مستقبل کا فیصلہ قبائلی عوام کے خواہشات کے مطابق کیا جائے اور فاٹا کو الگ صوبہ بنایا جائے ۔وی اوصدہ پریس کلب میں مشترکہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے جمیعت علمائے اسلام فاٹا کے امیر قاری افسر خان ، مفتی عبدالشکور ، قاری افسر خان اور دیگر رہنماوں نے کہا کہ فاٹا کو فی الفور الگ صوبہ بنایا جائے اور قبائلی عوام کے خواہشات کے مطابق فاٹا کے مستقبل کا فیصلہ کیا جائے ۔ جے یو آئی کے رہنماوں کا کہنا تھا کہ صرف طورخم کے بارڈر سے سالانہ پچیس ارب روپے وصول کئے جارہے ہیں اگر پورے فاٹا کے وسائل دیکھے جائیں تو الگ صوبہ کے اخراجات باآسانی برداشت کرسکتے ہیں اور فاٹا الگ صوبہ بننے کی وجہ سے سارے معدنیات اسی صوبے کو ملیں گے ۔رہنماوں کا کہنا تھا کہ صوبے میں فاٹا کے انضمام پر اختلافات ہیں اس لئے فاٹا کو الگ صوبہ بنایا جائے ۔ عائشہ گلالئی کے حوالے سے جے یو آئی کے رہنماوں نے کہا کہ عائشہ اور ریحام کے حوالے سے تبصرہ کرنے سے گریز کرتے ہوئے مولانا فضل الرحمان نے سنجیدہ سیاست دان کا ثبوت دیا ہے جمیعت العلمائے اسلام نے پندرہ اکتوبر کو پشاور میں فاٹا یوتھ کونسل منعقد کرنے کا بھی اعلان کیا جس میں طلبہ سمیت فاٹا بھر کے نوجوان شرکت کریں گے۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر